جنوبی وزیرستان میں دھماکے میں میجر ہلاک، دس زخمی

وزیرستان تصویر کے کاپی رائٹ AFP

پاکستان کے قبائلی علاقے جنوبی وزیرستان ایجنسی کے ہیڈکوارٹر وانہ میں دھماکے میں فوج کے ایک میجر ہلاک جبکہ ایک لیفٹیننٹ اور پانچ اہلکاروں سمیت دس افراد زخمی ہو گئے ہیں۔

یہ واقعہ آج صبح پونے 12 بجے کے وقت پیش آیا۔ فوج کے تعلقات عامہ کے محکمے کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ وانا میں سرچ آپریشن کے دوران گھریلو ساختہ بم کے دھماکے میں ایک میجر عمران ہلاک جبکہ چھ فوجی زخمی ہو گئے ہیں۔

وانا سے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق فوجی اہلکار معمول کی گشت پر تھے کہ اس دوران مرزا عالم مارکیٹ کے قریب دھماکہ ہوا۔ اس دھماکے میں میجر عمران ہلاک جبکہ لیفٹیننٹ طلحہ سمیت چھ فوجی زخمی ہوئے ہیں۔ زخمیوں میں چار راہگیر بھی شامل ہیں۔

ایسی اطلاعات بھی موصول ہوئی ہیں کہ دھماکہ دستی بم سے کیا گیا ہے لیکن سرکاری سطح پر اس کی تصدیق نہیں ہو سکی۔

دو ہفتے قبل جنوبی وزیرستان کی تحصیل برمل میں سکیورٹی فورسز کی ایک گاڑی پر نامعلوم مسلح افراد نے حملہ کیا تھا جس میں دو اہلکار ہلاک ہو گئے تھے۔ یہ واقعہ تحصیل برمل کے علاقے سپینہ خاورہ میں پیش آیا تھا۔

جنوبی وزیرستان میں دوسری جانب آپریشن راہ نجات کے متاثرین کی واپیسی کا سلسلہ بھی جاری ہے۔ یہ آپریشن 2009 میں شروع کیا گیا تھا اور اب پناہ گزینوں کی ان علاقوں کو واپسی ہو رہی ہے جو شدت پسندی سے زیادہ متاثر ہوئے تھے۔ سکیورٹی حکام نے آپریشن کے بعد اب ان علاقوں کو شدت پسندوں سے پاک قرار دیا ہے۔

اسی بارے میں