کراچی: مسافر ٹرینوں میں تصادم کے نتیجے میں 21 ہلاک، 60 زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption حادثے کے بعد بھاری مشنری کی مدد سے امدادی کارروائیاں کی گئیں

پاکستان کے سب سے بڑے شہر کراچی میں دو مسافر ٹرینوں کے تصادم کے نتیجے میں ہلاکتوں کی تعداد 21 ہو گئی ہے جبکہ 60 زخمی ہوگئے ہیں۔

حکام کا کہنا ہے کہ کراچی کے لانڈھی ریلوے سٹیشن کے قریب زکریا ایکسپریس اور فرید ایکسپریس کے ٹکرانے سے یہ حادثہ پیش آیا۔

٭ کراچی میں مسافر ٹرینوں میں تصادم: تصاویر

حادثے کے باعث کم از کم چار بوگیاں پٹڑی سے اتر گئیں۔

جمعرات کی صبح پیش آنے والے اس حادثے کے بعد وفاقی وزیر برائے ریلوے نے کراچی کا دورہ کیا اور میڈیا سے گفتگو میں بتایا کہ ہلاکتوں کی تعداد 21 ہو گئی ہے۔

وفاقی وزیر نے بتایا کہ حادثے کی تحقیقات آٹھ دن میں مکمل ہو جائیں گی۔

اس موقع پر انھوں نے ہلاک ہونے والوں کے لواحقین کے لیے 15، 15 لاکھ روپے جبکہ زخمیوں کے لیے تین، تین لاکھ روپے امداد کا اعلان کیا ہے۔

اس سے قبل جناح ہسپتال کی ترجمان ڈاکٹر سیمی جمالی نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے بتایا ہے کہ اس وقت ہسپتال میں 17 لاشیں اور 60 زخمی لائے گئے ہیں۔

انھوں نے بتایا کہ زخمیوں سے پانچ کی حالت تشویشناک ہے۔

ترجمان ڈاکٹر سیمی جمالی کے مطابق زیادہ زخمیوں کی ہڈیاں ٹوٹ گئی ہیں جبکہ شدید زخمیوں کو سر پر بھی چوٹیں آئی ہیں۔

ریلوے حکام کا کہنا ہے کہ امدادی کارروائیاں مکمل ہونے کے بعد کراچی کو ملک کے دوسرے علاقوں سے ملانے والی مرکزی ریلوے لائن کو بحال کر دیا گیا۔

وزیراعظم نواز شریف نے حادثے پر افسوس ک اظہار کیا ہے جبکہ وفاقی وزیر ریلوے نے حادثے کی تحقیقات کے لیے ایک کمیٹی بنا دی ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ ماہ بھی ایک مسافر ٹرین کو ملتان میں حادثہ پیش آیا تھا جب ملتان کے قریب پشاور سے کراچی جانے والی عوام ایکسپریس ایک مال گاڑی سے ٹکرا گئی تھی جس کے نتیجے میں چار افراد ہلاک اور 120 سے زائد زخمی ہوگئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں