’بلوچ عوام نے غیرملکی حمایت یافتہ دہشت گردوں کو مسترد کیا‘

تصویر کے کاپی رائٹ ISPR
Image caption بلوچستان کے عوام نے دہشت گردوں کے نیٹ ورک کو توڑنے میں ریاست کی مدد کی: جنرل راحیل شریف

پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف نے کہا ہے کہ بلوچستان کے عوام نے غیر ملکی حمایت یافتہ دہشت گردوں کو واضح طور پر مسترد کیا ہے۔

٭کوئٹہ میں دہشت گردی، وزیر اعظم کی سربراہی میں اہم اجلاس

٭ دہشتگردی کی ’حقیقت سے فرار ‘

ان خیالات کا اظہار انھوں نے بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں فوج کی جنوبی کمان کے ہیڈکوارٹرمیں فوج اور فرنٹیئر کور کے افسروں اور جوانوں سے الوداعی ملاقات کے موقع پرخطاب کرتے ہوئے کیا۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ، آئی ایس پی آر کے مطابق جنرل راحیل شریف نے کہا کہ بلوچستان کے عوام نے دہشت گردوں کے نیٹ ورک کو توڑنے میں ریاست کی مدد کی۔

انھوں نے فوج اورفرنٹیئرکور کے جوانوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ اب حالات دہشت گردوں اور ان کے حامیوں کے خلاف ہوگئے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ فراریوں کی بڑی تعداد ہتھیار ڈال رہی ہے۔

فوج کے سربراہ نے کہا کہ ہم بلوچستان اور ملک کے دیگر علاقوں میں قیام امن اور استحکام کے لیے حکومت کے ساتھ ملکر کام کرتے رہیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ فوج کے سربراہ کی حیثیت سے دوردراز کے علاقوں میں قیام امن اور ترقیاتی کاموں میں سویلین حکومت کی مدد ان کی ترجیح رہی جس کی وجہ سے ان کو تقریباً ہرماہ کوئٹہ آنا پڑا۔

فوج کے سربراہ نے کہا کہ گوادر پورٹ اور سی پیک سے ترقی کی نئی شاہراہیں کھلیں گی اور ان کا فائدہ عام آدمی کو ملے گا۔

انھوں نے بلوچستان کے دشوار گزار علاقوں میں، مشکل اورغیر موافق ماحول میں ایف ڈبلیو او اور این ایل سی کے ذریعے ایک ہزار سے زائد کلومیٹر روڈ کی بروقت تعمیر پر جنوبی کمان کی تعریف کی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں