ہیملٹن ٹیسٹ: بارش کے باعث پہلے دن کا کھیل متاثر

نیوزی لینڈ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption میچ کے پہلے ہی اوور میں محمد عامر نے پاکستان کو پہلی کامیابی دلا دی۔ انھوں نے ٹام لیتھم کو صفر کے سکور پر آؤٹ کر دیا۔

بارش نے نیوزی لینڈ کے شہر ہیملٹن میں کھیلے جانے والے پہلے دن کے کھیل کا سارا مزا کرکرا کر دیا اور صرف 21 اوورز کا کھیل ممکن ہو سکا جس کے دوران نیوزی لینڈ نے دو وکٹیں گنوا کر77 رنز بنائے تھے۔

کرائسٹ چرچ کی شکست کا حساب بے باق کرنے کے لیے پاکستانی ٹیم کے پاس آخری موقع ہے جو اگر اس نے گنوا دیا تو نیوزی لینڈ کی ٹیم 1985 کے بعد پہلی بار پاکستان کے خلاف ٹیسٹ سیریز جیتنے کا اعزاز حاصل کر لے گی۔

پاکستانی ٹیم کی ہیملٹن ٹیسٹ جیتنے کی بےتابی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاسکتا ہے کہ اس نے سیڈن پارک کی گرین وکٹ دیکھ کر اپنے بولنگ اٹیک میں دو تبدیلیاں کر ڈالیں۔ پہلے ٹیسٹ میں چار وکٹوں کی عمدہ کارکردگی بھی راحت علی کو باہر ہونے سے نہ روک سکی اور ان سے زیادہ تیز رفتار والے وہاب ریاض ٹیم کا حصہ بنے۔

اپنے کریئر میں پہلی بار وکٹ سے محروم رہنے والے یاسر شاہ کو بھی باہر بٹھا کر عمران خان کو ایک سال بعد ٹیم میں لایا گیا جو آخری بار گذشتہ سال انگلینڈ کے خلاف شارجہ میں کھیلے تھے۔

ایک میچ کی معطلی پر ٹیم سے باہر ہونے والے کپتان مصباح الحق کی جگہ محمد رضوان کو ٹیسٹ کیپ دی گئی ہے۔

پہلی بار ٹیسٹ میچ میں کپتانی کرنے والے اظہرعلی نے ٹاس جیت کر وکٹ اور موسم دیکھ کر پہلے بولنگ کا فیصلہ کیا تو ایسا لگا کہ محمد عامر طوفان لے آئیں گے۔

انھوں نے اپنے پہلے ہی اوور میں ٹام لیتھم کو صفر پر سلپ میں سمیع اسلم کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔

محمد عامر جیت راول کو بھی پویلین کی راہ دکھا دیتے لیکن سلپ میں سمیع اسلم نے کیچ گرا دیا۔

پاکستانی ٹیم نے دوسری اہم کامیابی کپتان ولیمسن کی وکٹ حاصل کر کے حاصل کی جو 13 رنز بناکر سہیل خان کی گیند پر وکٹ کیپر سرفراز احمد کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔

امپائر نے انھیں ناٹ آؤٹ قرار دیا تھا لیکن پاکستانی ٹیم نے ریویو لیا اور تھرڈ امپائر کا فیصلہ ان کے حق میں گیا۔

دوسرے اور تیسرے سیشن میں بارش نے پاکستانی بولروں کو مزید کچھ کردکھانے کا موقع ہی نہیں دیا اور پہلے دن کا کھیل ختم کردینا پڑا۔اس وقت جیت راول 35 اور راس ٹیلر29 رنز پر ناٹ آؤٹ تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں