پاکستانی آرمی چیف کا لائن آف کنٹرول کا دورہ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption جنرل باجوہ نے فوجیوں کو ہمہ وقت ہوشیار اور خبردار رہنے کی تلقین کی

پاکستانی فوج کے نئے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے راولپنڈی میں فوج کے ٹین کور ہیڈ کوارٹر اور لائن آف کنٹرول کے اگلے مورچوں کا دورہ کیا۔

* ’فوجی مہارت میں اضافے کا خواہشمند جنرل‘

فوجی سربراہ کو لائن آف کنٹرول پر جاری سیکیورٹی کی صورتحال سے آگاہ کیا گیا۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ سے جاری بیان کے مطابق آرمی چیف کو انڈین آرمی کی جانب سے ایل او سی کی خلاف ورزی اور پاکستانی فوج کی جوابی کارروائیوں سے متعلق بریفنگ بھی دی گئی۔

جنرل باجوہ نے فوج کے چوکس رہنے اور انڈّین فوج کی جانب سے سیز فائر کی خلاف ورزی کا مناسب جواب دینے کی تعریف کرتے ہوئے فوجیوں کو ہمہ وقت ہوشیار اور خبردار رہنے کی تلقین کی۔

آئی ایس پی آر کے بیان کے مطابق فوجی سربراہ نے کہا کہ انڈیا کا لائن آف کنٹرول پر جارحانہ رویہ محض انڈیا کے زیرِ انتظام کشمیر میں اس کی اپنی فوج کہ ہاتھوں ڈھائے جانے والے مظالم سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے۔

آرمی چیف کا مزید کہنا تھا کہ ’خطے میں مستقل امن کے لیے دونوں ملکوں کے درمیان جاری کشمیر کا تنازع اقوامِ متحدہ کی قراردادوں اور کشمیریوں کی مرضی کے مطابق حل کیا جانا ضروری ہے۔ ‘

ٹین کور کے کمانڈر لیفٹیننٹ جنرل ملک ظفر اقبال بھی ایل او سی کے دورے پر آرمی چیف کے ہمراہ تھے۔

اسی بارے میں