پاکستان میں شدت پسندوں کے خلاف بلاامتیاز آپریشنز کیے جائیں: آرمی چیف

تصویر کے کاپی رائٹ ISPR

پاکستان کی بّری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ دہشتگردی ناقابل قبول ہے اور شدت پسندوں کے خلاف مخصوص اور بلاامتیاز آپریشنز کیے جائیں۔

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ آرمی چیف نے یہ بات منگل کو کوئٹہ میں کہی۔

آرمی چیف نے کہا کہ شدت پسندوں کے خلاف مخصوص اور بلاامتیاز آپریشنز میں انٹیلیجنس ایجنسیاں اور قانون نافذ کرنے والے ادارے مدد کریں۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے ہیڈکوارٹر سدرن کمانڈ کا دورہ کیا، جہاں انھیں بلوچستان کی سکیورٹی صورتحال، کمانڈ کی جانب سے آپریشنل تیاریوں اور قیام امن کے لیے صوبہ بلوچستان میں جاری آپریشنز کی تفصیلات سے آگاہ کیا گیا۔

جنرل قمر جاوید باجوہ نے آرمی، فرنٹیئر کور، قانون نافذ کرنے والے اداروں اور انٹیلیجنس اداروں کو صوبے میں امن و امان کے قیام کے لیے نمایاں اقدامات کرنے کی ہدایت کی۔

انھوں نے صوبے میں قیام امن کے لیے بلوچستان کے عوام کی قربانیوں کو سراہا اور ان کی ہر ممکن مدد پر زور دیا۔

سکیورٹی اور ترقیاتی کاموں کے لیے سول حکومت اور فوج کی مربوط حکمت عملی کے حوالے سے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا کہ صوبے میں امن کے قیام کے لیے فوج صوبائی حکومت کو تمام ضروری سہولیات، لیویز کی صلاحیت کو بڑھانے میں مدد اور تمام دور دراز علاقوں میں جاری منصوبوں کے لیے سکیورٹی فراہم کرے گی۔

انھوں نے چین پاکستان اقتصادی راہداری کی فول پروف سکیورٹی کو یقینی بنانے کے عزم کا اظہار بھی کیا۔

آرمی چیف نے ایف ڈبلیو او اور این ایل سی کو صوبے میں سڑکوں کے نیٹ ورک کی تعمیر کی ہدایات بھی دیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں