’پنجاب میں مدارس کی جیو ٹیگنگ کا عمل مکمل‘

مدرسہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صوبائی محکمہ داخلہ کے مطابق مدارس کی اصلاحات کے لیے بھی تجاویز زیر غور ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب کی حکومت نے لاہور ہائیکورٹ کو آگاہ کیا ہے کہ حکومت نے مدارس کی جیو ٹیگنگ کا عمل مکمل کرلیا ہے اور مدارس کے مالی وسائل کی کڑی نگرانی کی جا رہی ہے۔

منگل کو یہ بات پنجاب حکومت نے نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لیے زیر سماعت درخواست کے جواب میں بتائی۔

پنجاب حکومت کے صوبائی محکمہ داخلہ نے لاہور ہائیکورٹ کے روبرو شق وار تحریری جواب جمع کرایا جس میں ان الزامات کی سختی سے تردید کی گئی ہے کہ پنجاب میں نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد نہیں کیا جا رہا۔

صوبائی محکمہ داخلہ نے تحریری جواب میں آگاہ کیا کہ نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کیلئے نا صرف نئے قوانین بنائے گئے بلکہ کئی قوانین میں بہتری لانے کیلئے ان میں ترامیم کی گئی۔

تحریری جواب میں مزید بتایا گیا کہ نئے قوانین کے تحت مقدمات عدالتوں میں زیر سماعت ہیں اور ملزموں کو سزائیں بھی سنائی گئی ہیں۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد کریم مقامی وکیل اظہر صدیق کی درخواست پر سماعت کر رہے ہیں جس میں الزام لگایا گیا ہے کہ پنجاب میں صوبائی حکومت نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کرنے میں ناکام ہے اور پلان پر اس کی اصل روح کے مطابق عمل درآمد نہیں کیا جا رہا۔

محکمہ داخلہ پنجاب نے جواب میں یہ بھی بتایا کہ کالعدم تنظیموں، ان سے منسلک افراد اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف محکمہ انسداد دہشت گردی اور قانون نافذ کرنے والے ادارے موثر کارروائی کر رہے ہیں اور کالعدم تنظیموں اور ان سے منسلک افراد کے اکاوئنٹس بھی منجمد کر دیے گئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

صوبائی محکمہ داخلہ کے مطابق مدارس کی اصلاحات کے لیے بھی تجاویز زیر غور ہیں جبکہ سوشل میڈیا پر غیر قانونی سرگرمیاں کرنے والوں کے خلاف بھی کارروائی کی جا رہی ہے۔

پنجاب حکومت نے تحریری جواب کے ذریعے اس تاثر کی نفی کی کہ پولیس کو وی آئی پیز کے ڈیوٹی پر مامور کر دیا جاتا ہے اور اپنی اصل ذمہ داریاں پوری نہیں کرسکتے۔ جواب میں دعویٰ کیا گیا کہ پنجاب حکومت نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کی درخواست کا جواب دینے کے لیے وفاقی حکومت نے مہلت مانگ لی.

لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب حکومت کے شق وار جواب کے بعد وفاقی حکومت کو جواب داخل کرانے کے لیے وقت دے دیا۔

نیشنل ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لیے درخواست پر مزید کارروائی 16 جنوری کو ہوگی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں