پاناما لیکس اور مشترکہ تحقیقاتی ٹیم

جے آئی ٹی کے سامنے سوال کیا؟

پاکستان کے سپریم کورٹ کی جانب سے پاناما کیس کے حقائق جاننے کے لیے بنائے جانے والی مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کو چودہ سوالات کی فہرست دی ہے۔

مودودی یا ماریو پوزو

ہم نے بھی سہمے ہوئے کنفیوزڈ مسلمانوں کی طرح تفہیم القرآن کو دِل میں رکھا اور گاڈ فادر کی ایک کوٹیشن اپنے کمرے کی دیوار پر لگا لی۔

'یہاں استعفیٰ دیا نہیں لیا جاتا ہے'

پاکستان میں جب کوئی جماعت حزبِ اختلاف ہوتی ہے تو اسے فوراً سیاسی اخلاقیات کا بھولا ہوا سبق یاد آنے لگتا ہے اور وہ کرپشن، نااہلی اور بد عنوانی کے خلاف سینہ سپر ہو جاتی ہے۔

عدالت کا ’ہومیوپیتھک فیصلہ‘

پاناما لیکس کے فیصلے سے پہلے ہی سپریم کورٹ کے اردگر کرفیو کا سماں تھا بعد میں مسلم لیگی رہنما سپریم کورٹ کے باہر میٹھائیاں تقسیم کرتے رہے جبکہ پاکستان تحریک انصاف کی قیادت اور کارکنوں نے بنی گالہ میں منہ میٹھا کیا

تلور سے پاناما تک!

آمدنی سے زائد خرچے کی پردہ پوشی کے لیے کسی شہزادے کا خط درکار ہو یا کسی کو کسی کے خلاف تحریک چلانے سے باز رکھنا یا حمایت پر آمادہ کرنا ہو۔ جب سب اندرونی کوششیں ناکام ہو جاتی ہیں تو پھر مقدمہ خلیجی جرگے کے روبرو جاتا ہے اور یوں سب ایک بار پھر ہنسی خوشی رہنے لگتے ہیں۔