پروفیسر کی بازیابی کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جائیں: وزیر داخلہ

تصویر کے کاپی رائٹ Facebook

وفاقی وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے اسلام آباد سے لاپتہ ہو جانے والے فاطمہ جناح یونیورسٹی کے پروفیسر سلمان حیدر کی بازیابی کے لیے پولیس اور دیگر متعلقہ اداروں کو کوششیں تیز کرنے اور تمام وسائل بروئے کار لانےکی ہدایت جاری کی ہے۔

انسانی حقوق کے کارکن اور سماجی امور پر شاعری کے حوالے سے پہچانے جانے والے پروفیسر سلمان حیدر جمعہ کی رات سے اسلام آباد سے لاپتہ ہیں۔

وزیر داخلہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ تمام متعلقہ اداروں کی مدد حاصل کرکے سلمان حیدر کی جلد از جلد بازیابی یقینی بنائی جائے۔

اسلام آباد کے علاقے لوئی بھیر کے پولیس سٹیشن میں درج کی گئی ایف آئی آر کے مطابق تاحال پروفیسر سلمان حیدر کی گمشدگی کی وجوہات واضح نہیں ہیں۔

ایف آئی آر میں کہا گیا ہے کہ سلمان حیدر جمعہ کی رات بنی گالا کے علاقے میں اپنے دوستوں کے ہمراہ موجود تھے اور انھوں نے اپنی اہلیہ کو اطلاع دی تھی کہ وہ رات آٹھ بجے تک گھر پہنچ جائیں گے۔

'دس بجے کے قریب سلمان کی اہلیہ نے انھیں فون کیا مگر انھوں نے فون ریسیو نہیں کیا۔'

ایف آئی آر کے مطابق سلمان حیدر کے نمبر سے ان کی اہلیہ کو ایک ایس ایم ایس موصول ہوا کہ کورال چوک سے ان کی گاڑی لے لی جائے۔

پولیس حکام کے مطابق سلمان حیدر کی گاڑی کورنگ ٹاؤن کے قریب سے ملی ہے جبکہ تھانہ لوئی بھیر میں ان کے اغوا کی رپورٹ درج کرلی گئی۔

سلمان حیدر پانچ سال سے زائد عرصے سے فاطمہ جناح یونیورسٹی سے منسلک ہیں۔ وہ ادب، تھیٹر میں اداکاری، ڈرامہ نگاری اور صحافت بھی کر چکے ہیں۔

متعلقہ عنوانات