مبارکبادوں سے تو لگ رہا ہے انڈیا کا ویزا نہیں، جنت کا ٹکٹ ملا ہو: عدنان صدیقی

عدنان صدیقی تصویر کے کاپی رائٹ ADNAN SIDDIQUI
Image caption عدنان نے امید ظاہر کے کہ پاکستان اور بھارت کے مابین تعلقات میں جلد بہتری آئے گی

پاکستانی آرٹسٹ عدنان صدیقی اور سجل علی کو انڈین حکومت نے بونی کپور اور سری دیوی کی فلم 'موم' میں کام کرنے کے لیے ویزا جاری کر دیا ہے۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے عدنان صدیقی نے بتایا کہ وہ اگلے ماہ انڈیا جائیں گے۔

عدنان کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ ویزا ملنے کے بعد سے 'مجھے جس طرح سے کالز آ رہی ہیں، لوگ کہہ رہے ہیں کہ مبارک ہو آپ کو ویزا مل گیا، مجھے تو ایسا لگ رہا ہے کہ ویزا نہیں، جنت کا ٹکٹ مل گیا ہو'۔

عدنان کا مزید کہنا تھا کہ موم سے پہلے بھی مجھے فلموں کی آفرز ملتی رہی ہیں لیکن یہ فلم سری دیوی بنا رہی ہیں اور وہ ایک ایسی آرٹسٹ ہیں جنہیں نہ صرف انڈیا بلکہ دنیا بھر میں قدر کی نگاہ سے دیکھا جاتا ہے۔

انڈیا اور پاکستان کے درمیان حالیہ کشیدگی کی وجہ سے پاکستانی اداکارہ ماہرہ خان انڈیا میں ریلیز ہونے والی اپنی فلم 'رئیس ' کی پروموشن سے الگ رہیں، اس حوالے سے عدنان کہتے ہیں کہ 'شوبز کا تعلق سیاست سے نہیں ہونا چاہیے، لیکن جب دو ملکوں کے درمیان ایسے تعلقات ہوں تو اس کی لپیٹ میں بہت سی چیزیں آ جاتی ہیں۔'

جب عدنان سے پوچھا گیا کہ کیا وہ ممبئی جا کر مہاراشٹر کے وزیراعلیٰ دیویندر فرنویس اور راج ٹھاکرے سے ملاقات کریں گے؟ تو عدنان کا کہنا تھا کہ 'اگر وہ مجھ سے ملنا چاہتے ہیں تو میں ضرور ملوں گا۔'

عدنان نے یہ بھی امید ظاہر کے کہ پاکستان اور انڈیا کے مابین تعلقات میں جلد بہتری آئے گی۔