سندھ طاس معاہدہ:’ورلڈ بینک تنازع کے حل میں مرکزی کردار ادا کرے‘

نواز شریف تصویر کے کاپی رائٹ PM HOUSE

پاکستان کے وزیراعظم محمد نواز شریف نے ورلڈ بینک کی چیف ایگزیکیٹو آفیسر کرسٹالینا جیورجیوا سے ملاقات میں اس امید کا اظہار کیا ہے کہ ثالثی عدالت کے قیام کے ذریعے ورلڈ بینک پاکستان اور انڈیا کے درمیان سندھ طاس معاہدے سے متعلق تنازعات کے حل کے لیے مرکزی کردار ادا کرے گا۔

رواں ماہ کے آغاز میں اپنا عہدہ سنبھالنے والی کرسٹالینا جیورجیوا پاکستان کے دورے کے بعد انڈیا بھی جائیں گی۔

٭’ورلڈ بینک سندھ طاس معاہدے پر عملدرآمد کرائے ‘

٭سندھ طاس معاہدے کو انڈیا منسوخ نہیں کر سکتا: پاکستان

جمعرات کو وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری بیان میں بتایا گیا کہ نواز شریف نے ورلڈ بینک کی سی ای او سے پاکستان اور انڈیا کے درمیان کشن گنگا اور رتلے نامی پن بجلی منصوبوں اور سندھ طاس معاہدے سے متعلق تنازع پر بات چیت کی۔

انھوں نے سماجی شعبوں، انفراسٹرکچر، توانائی اور آبی منصوبوں کے لیے ورلڈ بینک کی جانب سے ملنے والی امداد پر شکریہ بھی ادا کیا۔

یاد رہے کہ انڈیا اور پاکستان کے درمیان کیے جانے والا سندھ طاس معاہدہ ورلڈ بینک نے طے کرایا تھا اور وہ اس معاہدے کا دستخط کنندہ بھی ہے۔

اس سے قبل ایک پیغام میں کرسٹالینا جیورجیوا نے کہا تھا کہ ’میں دونوں ممالک کے رہنماؤں سے مل کے ان کی قومی ترقی کے بارے میں بات چیت کروں گی اور ساتھ ساتھ یہ بھی جاننا چاہوں گی کے سندھ طاس معاہدہ کے بارے میں ان دونوں کے کیا اعتراضات ہیں۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption ورلڈ بینک کی چیف ایگزیکیٹو آفیسر کرسٹالینا جیورجیوا

ورلڈ بینک کی چیف ایگزیکیٹو آفیسر نے پاکستان کی اقتصادی ترقی کی شرح برقرار رکھنے کے لیے مدد جاری رکھنے کا یقین دلایا ہے۔

دورہ پاکستان میں کرسٹالینا جیورجیوا مختلف حکومتی اہلکاروں سے ملاقاتوں کے علاوہ ورلڈ بینک کے زیر انتظام چلنے والے پراجیکٹس کا بھی معائنہ کریں گی۔

یاد رہے کہ ورلڈ بینک نے سندھ طاس معاہدے پر آبی تنازع کے حل کے لیے غیر جانبدار ماہر یا چیئرمین عالمی ثالثی عدالت کی تقرری روکتے ہوئے پاکستان اور انڈیا کو جنوری تک کی مہلت دی تھی۔

پچھلے سال دسمبر میں ورلڈ بینک کے مطابق یہ قدم اس لیے اٹھایا گیا تاکہ دونوں ممالک اس تنازعے کو حل کرنے کے لیے کوشش کریں۔

اس تنازعے کے حل کے لیے انڈیا نے ورلڈ بینک سے غیر جانبدار ماہر کا تقرر کرنے کی درخواست کی تھی جبکہ پاکستان نے بھی چیئرمین عالمی ثالثی عدالت کے تقرر کی درخواست کی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں