سلمان تاثیر کی برسی کی تقریب پر حملہ کرنے والے مرکزی مجرم کو سزا

لاہور ہائیکورٹ تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption لاہور ہائیکورٹ نے مجرموں کی سزا کو برقرار رکھا ہے

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور میں قائم انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے مقتول گورنر سلمان تاثیر کی برسی کی تقریب پر دو سال قبل حملہ کرنے والے مرکزی مجرم ممتاز سندھی کو 16 سال قید کی سزا سنا دی ہے۔

٭سلمان تاثیر کی برسی کی تقریب پر حملہ کرنے والوں کی سزا برقرار

٭ ’عشق قاتل سے بھی، مقتول سے ہمدردی بھی‘

ممتاز سندھی پر الزام تھا کہ اس نے اپنے ساتھیوں کے ساتھ مل کر لاہور کے معروف علاقے لبرٹی چوک میں مقتول گورنر پنجاب سلمان تاثیر کی چوتھی برسی کے حوالے سے تقریب پر دھاوا بول دیا اور اس میں شریک افراد پر حملہ کیا اور زخمی کر دیا۔

انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے ممتاز سندھی کے خلاف الزامات ثابت ہونے پر انھیں مختلف دفعات میں مجموعی طور پر ساڑھے 16 برس کی سزا سنائی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لاہور میں سلمان تاثیر کی برسی کے موقع پر جمع ہونے والے افراد

یاد رہے کہ انسداد دہشتگردی کی خصوصی عدالت نے دو سال قبل یعنی 27 جولائی 2015 کو اسی مقدمے کے دیگر پانچ ملزموں عدیل، فرقان، افتخار، وزیر علیٰ اور کاشف منیر کو بھی سزا سنائی تھی۔

تاہم ممتاز سندھی کے مفرور ہونے اور بعد میں گرفتار ہونے پر اس کے خلاف مقدمے کی الگ کارروائی کی گئی۔ انسداد دہشت گردی کہ خصوصی عدالت نے ملزم ممتاز سندھی کے خلاف مقدمہ کی کارروائی مکمل ہونے پر سزا سنائی۔

مقتول گورنر پنجاب کی برسی کی تقریب پر حملے کا مقدمہ سماجی کارکن عبداللہ ملک نے گلبرگ تھانہ میں درج کرایا تھا

مجرم ممتاز سندھی قانون کے تحت فیصلے کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں اپیل کرسکتا ہے۔

خیال رہے کہ لاہور ہائیکورٹ کا دو رکنی بنچ گزشتہ برس اپریل اسی مقدمہ کے دیگر پانچ مجرموں کی سزا کے خلاف اپیل مسترد کر چکی ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں