ٹانک میں فوجی آپریشن، ’چار شدت پسند ہلاک‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP

پاکستانی فوج نے ایک بیان میں فاٹا کے انتظامی یونٹ فرنٹیئر ریجن ٹانک کے علاقے میں آپریشن کے دوران چار شدت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری بیان کے مطابق فوج نے خفیہ اطلاع پر ایف آر ٹانک کے علاقے پنگ میں کارروائی کی جس کے نتیجے میں 'کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے عصمت اللہ شاہین بھٹانی گروپ کے چار انتہائی مطلوب دہشت گرد مارے گئے'۔

بیان کے مطابق ہلاک ہونے والوں میں کمانڈر زمان عرف طوفان، نائب کمانڈر عمر ولد عصمت اللہ شاہین، کمانڈر وسیع اللہ اور کمانڈر ظلم دین عرف ظلمت شامل ہیں۔

آئی ایس پی آر کے مطابق دہشت گردوں کے قبضے سے اسلحہ اور گولیاں بھی برآمد ہوئیں تاہم ان اطلاعات کی آزاد ذرائع سے تصدیق نہ ہوسکی۔

بیان میں یہ بھی بتایا گیا کہ مذکورہ گروپ مبینہ طور پر ڈیرہ اسماعیل خان، ٹانک اور اطراف کے علاقوں میں ٹارگٹ کلنگ، بھتہ خوری اور اغوا برائے تاوان جیسی وارداتوں میں ملوث تھا۔

آئی ایس پی آر کے مطابق عصمت اللہ شاہین کالعدم ٹی ٹی پی شوریٰ کا اہم رکن تھا تاہم اندرونی جھگڑوں کی وجہ سے ٹی ٹی پی کے ایک اور گروہ نے ان کو 2014 میں قتل کردیا تھا۔

یاد رہے کہ کالعدم تحریک طالبان پاکستان کے سربراہ حکیم اللہ محسود کی امریکی ڈرون حملے میں ہلاکت کے بعد عصمت اللہ شاہین ٹی ٹی پی کے قائم مقام سربراہ کے ساتھ ساتھ شوریٰ کے بھی رکن رہ چکے ہیں۔

عصمت اللہ شاہین نے 2009 میں کراچی میں عاشورہ کے جلوس پر ہونے والے خود کش دھماکے کی ذمہ داری بھی قبول کی تھی جس میں 44 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں