’افغان طالب علم پاکستانی مدرسوں میں زیرتعلیم ہیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption 'بلوچستان کے دینی مدارس میں جو افغان طالب علم پڑھ رہے ہیں لیکن صحیح تعداد کے بارے میں ان کو علم نہیں : بلوچستان وزیر داخلہ

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی نے کہا ہے کہ بلوچستان کے دینی مدارس میں افغانستان سے تعلق رکھنے والے طالب علم زیر تعلیم ہیں۔

بی بی سی سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان کے دینی مدارس میں غیر ملکی طالب علم بھی تعلیم حاصل کررہے ہیں ۔

انہوں نے بتایا کہ ان غیر ملکی طلبہ کی تعداد کم ہے اور ان کا تعلق افغانستان سے ہے ۔

وزیر داخلہ کا کہنا تھا کہ 'بلوچستان کے دینی مدارس میں جو افغان طالب علم پڑھ رہے ہیں ان کی صحیح تعداد کے بارے میں ان کو علم نہیں لیکن جتنے بھی افغان بچے پڑھ رہے ہیں وہ رجسٹرڈ ہیں ۔‘

افغانستان میں روسی فوجوں کی آمد کے باعث افغانستان سے مہاجرین کی ایک بہت بڑی تعداد بلوچستان آئی تھی ۔

ابتدائی طور پر یہ افغان مہاجرین بلوچستان کے سرحدی اضلاع میں کیمپوں میں رہائش پذیر تھے تاہم بعد میں جب کمیپوں میں ان کی امداد میں کمی آئی تو ان میں سے ایک بڑی تعداد نے شہروں کا بھی رخ کر لیا ۔

بلوچستان کے جن اضلاع میں کیمپوں میں اب بھی افغان مہاجرین آباد ہیں ان میں لورالائی، پشین، قلعہ عبد اللہ اور چاغی کے علاوہ ضلع کوئٹہ کا علاقہ پنجپائی شامل ہے ۔

جن علاقوں میں افغان مہاجرین کے کیمپ قائم ہیں ان میں بھی دینی مدارس کی ایک بڑی تعداد تھی ۔

جب وزیر داخلہ سے پوچھا گیا کہ کیا بلوچستان میں ایسے مدارس بھی ہیں جن کو افغان مہاجرین چلارہے ہیں تو انھوں نے اس حوالے سے لاعلمی کا اظہار کیا

اسی بارے میں