’دہشت گردی کے خلاف آپریشن میں علاقے، رنگ اور فرقے کی تفریق نہیں کی جائے گی‘

نواز شریف تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

پاکستان کے وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے کہا کہ کہ ملک سے دہشت گردی کا مکمل خاتمہ کیا جائے اور اس ضمن میں کسی علاقے، رنگ یا فرقے میں امتیاز نہیں کیا جائے گا۔

٭دہشت گردی کے خلاف ’رد الفساد‘ کے نام سے نیا آپریشن

٭پختونوں کو پنجاب میں رہنے کا پورا حق ہے: رانا ثنا اللہ

جمعے کو وزیراعظم ہاؤس میں میاں محمد نواز شریف کی سربراہی میں ہونے والے اعلیٰ سطح کے اجلاس میں 22 فروری کو ملک بھر میں شروع ہونے والے آپریشن رد الفساد میں ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

پاکستان کی سیاسی اور عسکری قیادت نے فیصلہ کیا ہے کہ متعین کیے گئے اہداف کے حصول تک آپریشن رد الفساد جاری رہے گا۔

وزیراعظم ہاؤس کی جانب سے جاری ہونے والے تحریری بیان کے مطابق اجلاس کے شرکا نے اس بات پر بھی زور دیا کہ آپریشن رد الفساد یکطرفہ قومی فیصلہ اور ملک بھر سے دہشت گردی کو ختم کرنے کا عزم ہے۔

بیان کے مطابق وزیراعظم نواز شریف نے کہا کہ تمام سٹیک ہولڈرز میں ہر سطح پر اتفاق رائے موجود ہے اور عوام چاہتے ہیں کہ انھیں دہشت گردی اور انتہا پسندی سے چھٹکارے کی یقین دہانی ملے اور جنگ میں کامیابی ہو۔

'پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں بے انتہا قربانیاں دی ہیں اور ہم کسی علاقے، رنگ یا فرقے کی تفریق کے بغیر دہشت گردی کو ختم کرنے کے لیے تمام اقدامات کرنے کے عزم پر قائم ہیں۔'

خیال رہے کہ 22 فروری کو ملک میں ایک ہفتے کے دوران دہشت گردی کی پے در پے وارداتوں میں سو سے زیادہ شہریوں کی ہلاکت کے بعد فوج نے ایک اعلی سطح کے اجلاس میں دہشت گردوں اور انتہا پسندوں کے خلاف 'رد الفساد' کے نام سے ایک نیا سکیورٹی آپریشن شروع کرنے کا اعلان کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images
Image caption پاکستانی فوج کی جانب سے آپریشن رد الفساد کے اعلان سے کچھ ہی گھنٹے قبل پاکستان کی وفاقی کابینہ نے پنجاب میں پولیس کی معاونت کے لیے رینجرز کو اختیارات دینے کا اعلان کیا تھا

دوسری جانب نامہ نگار جمعرات کی رات ایف آر بنوں کے مضافات شدت پسندوں کے ساتھ جھڑپ میں ہلاک ہونے والے فوج کے لیفٹیننٹ خاور اور نائک شہزادہ خان کی نماز جنازہ ادا کر دی گئی ہے۔

خفیہ اطلاع پر کی جانے والی سکیورٹی فورسز کی کارروائی میں چار شدت پسند بھی ہلاک ہو گئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں