’ایسی باتوں پر تو قتل ہو جاتے ہیں‘

پالیمان تصویر کے کاپی رائٹ AFP

جمعرات کے روز حزب مخالف کی جماعت پاکستان تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی مراد سعید کی طرف سے حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نون کے رکن جاوید لطیف کو مکا مارنے کے واقعے کی بازگشت جمعے کے روز بھی پارلیمان کے ایوانوں میں سنائی دیتی رہی۔

جاوید لطیف اپنے الفاظ واپس لینے کے لیے تیار تھے لیکن پاکستان تحریک انصاف کے ارکان اسمبلی اُنھیں معاف کرنے کو تیار دکھائی نہیں دیتے تھے۔

جمعے کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں وقفہ سوالات پر کارروائی جاری تھی کہ اسی دوران پاکستان تحریک انصاف کے رکن اسمبلی ڈاکٹرعارف علوی نے ذاتی وضاحت پر نقطۂ اعتراض پر بات کرتے ہوئے کہا کہ کل جو واقعہ ہوا اس پر تمام ارکان شرمندہ ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Murad Saeed Facebook
Image caption چیئرمین عمران خان نے اپنے کارکنوں سے کہا ہے کہ وہ ایسی کسی تقریب میں نہ جائیں جس میں جاوید لطیف شریک ہوں

تاہم ڈاکٹر عارف علوی جو تحمل مزاج کے سیاست دان سمجھے جاتے ہیں اس معاملے پر غصے میں دکھائی دیے۔ اُنھوں نے کہا کہ ’جناب سپیکر یہ تو شکر ہے کہ اُنھیں رات کو ان باتوں کا پتا چلا ورنہ ایسی باتوں پر تو خون خرابہ اور قتل ہو جاتے ہیں۔‘

پاکستان تحریک انصاف کے ارکان جاوید لطیف کی قومی اسمبلی کی رکنیت فوری طور پر معطل کرنے کا مطالبہ کرنے کے بعد حزب مخالف کی سب سے بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کے ارکان قومی اسمبلی کے ہمراہ اجلاس سے واک آوٹ کر گئے۔

جاوید لطیف کو جب ذاتی وضاحت کا موقع دیا گیا تو اس وقت ایوان میں حکومتی ارکان اور ایم کیو ایم کے ارکان کے علاوہ اور کوئی نہیں تھا جس پر ایوان میں موجود حکمراں جماعت کے ارکان نے پارٹی کا اجلاس کرلیا۔

جاوید لطیف کی ذاتی وضاحت نہ کے بعد حکمراں جماعت کے ارکان اسمبلی بھی کافی غصے میں دکھائی دیتے تھے۔

وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے مراد سعید کو ’نوخیز رکن اسمبلی‘ قرار دیتے ہوئے کہا کہ وہ پہلے بھی متعدد مرتبہ ارکان پارلیمان سے لڑ چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے مراد سعید کو 'نوخیز رکن اسمبلی' قرار دیا

وفاقی وزیر ریلوے جو پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین پر تنقید کرنے کا کوئی موقع نہیں جانے دیتے، یہ کہہ دیا کہ اگر عمران خان نے اپنے کارکنوں کی تربیت بہتر انداز میں کی ہوتی تو کل والا واقعہ پیش نہ آتا۔

جاوید لطیف جو مراد سیعد کے خلاف استعمال کیے گئے وہ دو الفاظ تو واپس لینے کو تیار تھے لیکن وہ پی ٹی آئی کے سربراہ کو غدار کہنے کے موقف سے پیچھے ہنٹے کو تیار نہیں ہیں۔

مکے کی بازگشت سینٹ کے اجلاس میں بھی سنائی دی اور متعدد سنیٹرز ایک دوسرے سے پوچھ رہے تھے کہ کل والے واقعے کا کیا بنا۔

جمعے کے روز قومی اسمبلی کے اجلاس میں مراد سعید شریک نہیں ہوئے دوسری طرف پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے اپنے کارکنوں سے کہا ہے کہ وہ ایسی کسی تقریب میں نہ جائیں جس میں جاوید لطیف شریک ہوں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں