الیکشن کمیشن میں عمران خان کے خلاف نااہلی ریفرنس نا قابلِ سماعت قرار دے کر مسترد

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان تحرکِ انصاف نے قومی اسمبلی کے سپیکر ایاز صادق کے خلاف احتجاجی مہم چلانے کا اعلان کیا

پاکستان کے الیکشن کمیشن نے پاکستان تحریکِ انصاف کے چیئرمین عمران خان اور جنرل سیکرٹری جہانگیر ترین کے خلاف قومی اسمبلی کے سپیکر کی طرف سے بھیجے گئے ریفرنس کو ناقابلِ سماعت قرار دے کر مسترد کر دیا ہے۔

قومی اسمبلی کے سپیکر ایاز صادق نے گذشتہ سال ستمبر میں الیکشن کمیشن کو ریفرنس بھجوایا تھا جس میں ان دونوں ارکان اسمبلی کے خلاف اثاثے چھپانے اور مختلف بینکوں سے قرضے لے کر معاف کروانے کے الزامات عائد کیے تھے۔

الیکشن کمیشن کا نااہلی ریفرنس میں عمران خان کو پیش ہونے کا حکم

’کمیشن کو نااہلی کیس کی سماعت کا اختیار نہیں‘

’عمران خان کی ویڈیو اور اظہارِ یکجہتی ‘

نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق چیف الیکشن کمشنر ریٹائرڈ جسٹس سردار رضا خان کی سربراہی میں الیکشن کمیشن کے تمام ارکان نے مختصر فیصلہ سناتے ہوئے اس ریفرنس کو ناقابلِ سماعت قرار دیا۔

حکمران جماعت سے تعلق رکھنے والے دو ارکانِ اسمبلی دانیال عزیز اور طلال چوہدری نے الیکشن کمیشن کے اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج کرنے کا فیصلہ کیا۔

دوسری جانب پاکستان تحرکِ انصاف نے قومی اسمبلی کے سپیکر ایاز صادق کے خلاف احتجاجی مہم چلانے کا اعلان کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ سپیکر نے اپنے رہنما یعنی وزیرِ اعظم نواز شریف کو بچانے کے لیے ان کے خلاف ریفرنس الیکشن کمیشن کو بھجوائے۔

یاد رہے کہ حزب مخالف کی جماعتوں پاکستان پیپلز پارٹی اور پاکستان تحریکِ انصاف نے پاناما لیکس میں وزیر اعظم میاں نواز شریف کے بچوں کے نام آنے کے بعد اُنھیں نااہل قرار دینے سے متعلق الیکشن کمشین اور سپریم کورٹ میں درخواستیں داخل کروائیں تو حکمراں جماعت پاکستان مسلم لیگ نواز نے پارلیمنٹ میں پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی نااہلی سے متعلق ریفرنس قومی اسمبلی کے سپیکر کے دفتر میں جمع کروا دیا تھا۔

اسی بارے میں