مال روڈ دھماکے کے سہولت کار سمیت 10 شدت پسند ہلاک: سی ٹی ڈی کا دعویٰ

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

پنجاب پولیس کے محکمہ انسداد دہشت گردی نے دعویٰ کیا ہے کہ لاہور کے قریب کارروائی میں کالعدم تنظیم کے 10 مبینہ دہشت گرد ہلاک ہوگئے۔

سی ٹی ڈی کے ترجمان نے مناواں میں کارروائی کرنے کا دعویٰ کیا۔

سی ٹی ڈی ترجمان نے دعویٰ کیا کہ ہلاک ہونے والے شدت پسند میں لاہور کے مال روڈ پر ہونے والے دھماکے کا سہولت کار بھی شامل تھا۔

ترجمان کے مطابق جمعہ اور ہفتے کی درمیانی شب کو لاہور سے ایک ٹیم اسلحہ و بارود برآمد کرنے کے لیے مال روڈ دھماکے کے سہولت کار انوارالحق سمیت پانچ گرفتار مشتبہ افراد کو لے کر نواحی علاقے مناواں جارہی تھی جب رنگ روڈ کے نزدیک نوشدت پسندوں نے حملہ کیا۔

ان کے مطابق حملہ آور گرفتار مشتبہ افراد کو بازیاب کرا کر مناواں کے علاقے میں دریائے راوی کی جانب فرار ہوئے، جس کے بعد سی ٹی ڈی نے اضافی نفری طلب کی اور ان افراد کا پیچھا کیا۔

ترجمان نے مزید بتایا کہ پولیس نے انھیں ہتھیار ڈالنے کا حکم دیا تاہم شدت پسندوں نے پولیس پر فائر کھول دیا۔ ٹیم کی جوابی فائرنگ کے نتیجے میں 10 شدت پسند ہلاک ہوگئے۔

ہلاک ہونے والے پانچ شدت پسندوں کی شناخت انوار الحق، عبداللہ، عطاالرحمٰن، امام شاہ اور عرفان خان کے نام سے ہوئی۔

چیئرنگ کراس کے مقام پر ہونے والے خودکش دھماکے میں ڈی آئی جی ٹریفک احمد مبین اور ایس ایس پی آپریشنز زاہد گوندل سمیت 13 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں