جنرل راحیل شریف کو مسلم ممالک کے فوجی اتحاد کی قیادت سنبھالنے کے لیے این او سی جاری

raheel تصویر کے کاپی رائٹ APP

وفاقی حکومت نے بّری فوج کے سابق سربراہ جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف کو مسلم ممالک کے فوجی اتحاد کی قیادت سنبھالنے کے لیے این او سی جاری کردیا ہے جس کے بعد جنرل راحیل شریف خصوصی طیارے کے ذریعے سعودی روانہ ہو گئے ہیں۔

یہ این او سی وزیر اعظم میاں نواز شریف کی منظوری کے بعد وزارت دفاع نے جاری کیا ہے۔

’راحیل شریف نے اب تک ’این او سی‘ نہیں مانگا‘

’ایران کے لیے عالم، سعودی عرب کے لیے دہشت گرد‘

عسکری اتحاد: راحیل شریف کی قیادت پر ایران کو تحفظات

وفاقی وزیر دفاع خواجہ آصف کے مطابق جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف کو مسلم ممالک کے فوجی اتحاد کی سربراہی میں سعودی عرب نے خصوصی دلچپسی ظاہر کی تھی جس کے بعد بّری فوج کے سابق سربراہ نے این او سی جاری کرنے کی درخواست دی۔

جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف گذشتہ برس نومبر میں اپنے عہدے کی مدت پوری کرنے کے بعد ریٹائر ہوگئے تھے جن کے بعد جنرل قمر جاوید باجوہ کو پاکستانی فوج کا نیا سربراہ مقرر کیا گیا تھا۔ راحیل شریف نے بطور آرمی چیف اپنی سروس میں توسیع لینے سے پہلے ہی انکار کردیا تھا۔ پاکستانی سیاست دانوں نے راحیل شریف کے اس فیصلے کو سراہا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption وزارت دفاع کے ایک اہلکار کے مطابق وزیر اعظم کی منظوری کے بعد جنرل راحیل شریف کو این او سی جاری کردیا گیا

جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف کی طرف سے این او سی کے بارے میں دی گئی درخواست پر قانون کے مطابق وزارت دفاع میں جانچ پڑتال کی گئی جس کے بعد این او سی جاری کرنے کے بارے میں فائل وزیر اعظم کو بھجوائی گئی۔

وزارت دفاع کے ایک اہلکار کے مطابق وزیر اعظم کی منظوری کے بعد جنرل راحیل شریف کو این او سی جاری کردیا گیا۔

پاکستانی فوج کے سابق سربراہ 39 مسلم ملکوں کے فوجی اتحاد کی سربراہی کے لیے لاہور سے خصوصی طیارے کے ذریعے سعودی عرب روانہ ہوگئے ہیں۔

دوسری جانب حزب مخالف کی دوسری بڑی جماعت پاکستان تحریک انصاف نے جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف کو 39 مسلم ممالک کی فوج کا سربراہ مقرر کرنے کے لیے این او سی جاری کرنے کے معاملے کو پارلیمنٹ لے کر گئی ہے۔ تاہم یہ معاملہ پارلیمنٹ میں زیر بحث لائے جانے سے پہلے ہی حکومت نے جنرل ریٹائرڈ راحیل شریف کو این او سی جاری کردیا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں