چیئرمین نیب کی برطرفی کے لیے پی ٹی آئی کا سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس

نیب

پاکستان کی پارلیمان میں حزب مخالف کی دوسری بڑی جماعت پاکستان تحریک انصاف نے قومی احتساب بیورو یعنی نیب کے چیئرمین قمر زمان چوہدری کی برطرفی کے لیے سپریم جوڈیشل کونسل میں ریفرنس دائر کر دیا ہے۔

پاکستان تحریک انصاف نے آئین کے آرٹیکل 209 کے تحت یہ ریفرنس پیر کو داخل کروایا ہے۔

پاناما کیس: سپریم کورٹ نے نیب اور ایف بی آر کو طلب کر لیا

حدیبیہ ملز مقدمہ: نیب اپیل نہ کرنے کے فیصلے پر قائم

پاکستان تحریک انصاف کے ایک ترجمان فواد احمد چوہدری کے مطابق پاناما لیکس سے متعلق سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بینچ نے اپنے فیصلے میں نیب کے چیئرمین کے خلاف بڑے سخت ریمارکس دیے ہیں۔

بی بی سی اردو کے نامہ نگار شہزاد ملک کے مطابق فواد چوہدری نے کہا کہ نیب کے موجودہ چیئرمین کے ہوتے ہوئے وزیر اعظم اور اُن کے اہل خانہ کے خلاف شفاف تحقیقات نہیں ہو سکتیں، اس لیے اُنھیں عہدے سے ہٹایا جائے۔

واضح رہے کہ پاناما لیکس سے متعلق درخواستوں کی سماعت کے دوران چیئرمین نیب نے حدیبیہ پیپرز ملز کے مقدمے میں لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کرنے سے انکار کر دیا تھا۔

لاہور ہائی کورٹ نے حدیبیہ پیپرز ملز کے مقدمے میں وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو بری کر دیا تھا۔ اُن پر الزام تھا کہ اُنھوں نے وزیر اعظم میاں نواز شریف کے لیے منی لانڈرنگ کی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستان تحریک انصاف نے آئین کے آرٹیکل 209 کے تحت ریفرنس داخل کروایا ہے

فواد چوہدری کا کہنا تھا کہ نیب کے چیئرمین کی موجودگی میں انصاف کے تقاضے پورے نہیں ہو سکتے اس لیے اُنھیں فوری طور پر عہدے سے ہٹایا جائے۔

خیال رہے کہ قمر زمان چوہدری کو وزیر اعظم اور قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے مشاورت کے بعد چیئرمین نیب مقرر کیا تھا۔ ان کا عہدہ تین سال کے لیے ہے جو رواں سال اکتوبر میں ختم ہو جائے گا۔

واضح رہے کہ اعلیٰ عدلیہ کے ججوں کو اُن کے عہدوں سے ہٹانے کے لیے بھی آئین کے آرٹیکل 209 کے تحت ریفرنس دائر کیا جاتا ہے۔

سپریم جوڈیشل کونسل میں ہائی کورٹس کے پانچ ججوں کے خلاف ریفرنس دائر کیے گئے ہیں تاہم اُن کی سماعت کے لیے ابھی تک سپریم جوڈیشل کونسل کا اجلاس نہیں ہوا۔

جن ججوں کے خلاف ریفرنس دائر کیے گئے ہیں اُن میں اسلام آباد ہائی کورٹ کے چیف جسٹس محمد انور کاسی اور ایک اور جسٹس شوکت عزیز صدیقی شامل ہیں۔

اسی بارے میں