’اس جملے کی معذرت تو شاید ہو سکے مگر ذہنیت کا کیا کریں‘

اڈاری تصویر کے کاپی رائٹ Hum TV

سوشلستان سمجھتا ہے کہ فوج اور نواز حکومت میں ٹاکرا ہونے کو ہے۔ سوشلستان کے جہادی سمجھتے ہیں کہ توہین کا الزام لگانے کے لیے ری ٹویٹ کرنا کافی ہے اور جو لوگ مردان میں مرنے والے مشال کی تدفین کے دوسرے دن حالات کو بھانپ کر تردید کرنے آئے تھے اب یہ توہین کا الزام ان کے دروازے پر دستک دینے پہنچ چکا ہے۔

مگر اس ہفتے کے سوشلستان میں ہم بات شروع کریں گے کامیڈینز اور بچوں کے جنسی استحصال جیسے حساس معاملے سے۔

’لاہور والے اچھی بریانی کیسے بنا سکتے ہیں؟‘

’کیا ریاست نفرت کی سرپرستی کرتی ہے‘

امریکە میں اسلام بذریعہ ٹرمپ

'بچوں کا جنسی استحصال مذاق نہیں'

گذشتہ دنوں ایک نجی چینل کے ایوارڈز کی تقریب میں میزبان نے اداکار احسن خان کو دیکھ کر مذاقًا ایسی بات کہی جس پر سوشل میڈیا نے کامیڈین کو آڑے ہاتھوں لیا۔

اہم بات یہ ہے کہ اس ملک کے نامی گرامی اداکار، فنکار، ڈرامہ نگار، موسیقار سب اس تقریب میں موجود تھے جن کی طرف سے اس جملے کے بعد ایک قہقہہ بلند ہوا۔

مگر اس مذاق پر کم از کم 'کی بورڈ' جنبش میں آئے اور لوگوں نے اس پر خوب تنقید کی جس پر مذاق کرنے والے نے معذرت بھی کی کہ یہ سب سکرپٹ کا حصہ نہیں تھا۔

یہ بات سن کر بہت سے ایسے ہیں جو سوچتے ہیں کہ 'معاملہ اب زیادہ تشویش ناک ہے کیونکہ معذرت اس جملے کی تو شاید ہو سکے مگر اس ذہنیت کا کیا بنے گا۔؟'

معروف گلوکارہ حدیقہ کیانی نے ٹوئٹر پر لکھا کہ 'یہی ہمارے معاشرے میں خرابی ہے۔ لوگ یہ سمجھتے ہیں کہ یہ ٹھیک ہے اتنے نیچ درجے پر اترنا اور اتنے فضول انداز میں بات کرنا۔ میں سارا الزام میزبان کے سر نہیں تھونپ رہی۔ بلکہ ہر ایک پر جو اس کمرے میں موجود تھا اور جو اس پر ہنستے رہے۔ آپ سب جوابدە ہیں۔ ایسے کلچر کے سامنے خاموش رہنا بہت بری بات ہے مگر اس پر ہنسنا بہت گھٹیا بات ہے۔'

لائیو سٹریمنگ اور ویڈیو کا مستقبل

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

فیس بُک اور پیری سکوپ جیسی ایپلیکشنز کے سبب دنیا بھر میں لائیو سٹریمنگ کا رجحان بہت عام ہورہا ہے اور ویب سائٹ مارکیٹ اینڈ مارکیٹ کے مطابق اگلے چار سالوں تک دنیا کی ویڈیو سٹریمنگ مارکیٹ کی کُل مالیت 70 ارب ڈالر تک پہنچ جائے گی۔

سوشل میڈیا پر ویڈیو کے رجحان میں اضافے کے سبب ادارے اب ویڈیو کے استعمال کو ترجیح دے رہے ہیں اور مقامی طور پر پاکستان میں اگر دیکھا جائے آن ڈیمانڈ ویڈیو کی مانگ میں بہت اضافہ ہوا ہے۔

حال ہی میں مقبول ہونے والے ویڈیو اشتہارات اس بات کا ثبوت ہیں کو ٹی وی کی نسبت سوشل میڈیا پر ایسے اشتہارات کی مقبولیت بہت زیادە ہوتی ہے اور اس کی پیمائش کی جا سکتی ہے ۔

اس ہفتے کی تصاویر

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں وزیراعلیٰ اور کور کمانڈر کے سامنے ہتھیار ڈالنے کی تقریب۔

تصویر کے کاپی رائٹ Twitter

پاکستان میں افغان سفیر ڈاکٹر عمر ذاخلوال کی ایک ٹویٹ جس میں انھوں نے حکمت یار کی کابل میں تصویر کے بارے میں کہا کہ اس عمل کا آغاز ایک برس قبل اسلام آباد میں ان کی رہائش گاہ پر ایک مختصر گفتگو سے ہوا تھا۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں