کٹاس راج کا خشک تالاب

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ Umayr Masud
Image caption ماضی میں نیلگوں پانی سے بھرا رہنے والا تالاب سوکھ کر کچھ ایسا منظر پیش کرنے لگا ہے

پاکستان کے صوبہ پنجاب کے ضلع چکوال میں واقع ہندؤں کے مقدس مقام کٹاس راج مندر کے تالاب کا پانی ان دنوں تقریباً خشک ہوچکا ہے۔

چکوال کے علاقے چواسیدن شاہ میں واقع کٹاس راج کمپلیکس میں درجنوں مندروں کے آثار موجود ہیں۔

پاکستان کے مندر

کٹاس راج مندر کی بحالی کا منصوبہ

کٹاس کا طلسم کدہ

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

کٹاس راج کے مندروں کا ذکر مہا بھارت جو مسیح سے تین سو سال پہلے کی تصنیف ہے میں موجود ہے۔

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

براہموں کی روایت کے مطابق جب شیو دیوتا کی بیوی ستی مر گئی تو اسے اتنا دکھ ہوا کہ اس کی آنکھوں سے آنسوؤں کی ندی جاری ہو گئی اور ان سے دو متبرک تالاب معرض وجود میں آ گئے۔

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

ایک اجمیر کا پشکر اور دوسرا کٹک شیل۔ سنسکرت میں اس لفظ کا مطلب آنسوؤں کی لڑی ہے۔ یہی لفظ کثرت استعمال سے کٹاس بن گیا۔

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

ہندو مذہب کے ماننے والوں کے نزدیک اس تالاب کا پانی مقدس سمجھا جاتا ہے اور ہر سال انڈیا سمیت دنیا بھر سے یاتری یہاں مذہبی رسومات کی ادائیگی کے لیے آتے ہیں۔

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

سنہ 2005 میں حکومت پنجاب نے ہندوؤں کے اس مقدس مقام کی بحالی کا فیصلہ کیا تھا۔

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

اس وقت بھارتیہ جنتا پارٹی کے رہنما ایل کے ایڈوانی نے کٹاس کے مندروں کی بحالی کا افتتاح کیا تھا۔ بحالی کا یہ کام سنہ فروری 2014 میں مکمل ہوا تھا۔

کٹاس تصویر کے کاپی رائٹ umayr masud

تصاویر بشکریہ: عمیر مسعود

متعلقہ عنوانات