برطانیہ: حراست میں لیے گئے پی آئی اے کے 13 ملازمین رہا

پی آئی اے تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پی آئی اے کے ترجمان کے مطابق برطانوی حکام کو کیا اعتراضات تھے یہ بات ابھی تک معلوم نہیں ہوسکی

پاکستان کی قومی فضائی کمپنی پی آئی اے کے ترجمان کا کہنا ہے کہ برطانیہ میں حکام نے ائیرلائن کے ان 13 ملازمین کو رہا کر دیا ہے جنھیں پیر کو لندن کے ہیتھرو ایئرپورٹ پر حراست میں لیا گیا تھا۔

مشہود تاجپور نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ عملہ اسلام آباد سے لندن جانے والی پرواز پی کے 785 کا تھا اور برطانوی حکام نے طیارے کو تلاشی کے لیے تحویل میں لیا اور عملے کو بھی حراست میں لے لیا تھا۔

٭ لندن:پی آئی اے کے طیارے سے ایک شخص گرفتار

٭ پی آئی اے کے پانچ بڑے مسائل

ترجمان کا کہنا ہے کہ دو گھنٹے کی تلاشی کے بعد طیارے کو کلیئر قرار دیا گیا اور عملے کو ہوٹل جانے کی اجازت دے دی گئی۔

نامہ نگار ریاض سہیل کے مطابق مشہور تاجور نے کہا کہ یہ بات ابھی تک معلوم نہیں ہو سکی ہے کہ ’برطانوی حکام کو کیا اعتراضات تھے۔ کسی نے کوئی اطلاع دی تھی یا معمول کی چیکنگ تھی، فی الحال کچھ نہیں کہا جا سکتا۔‘

ترجمان نے کہا کہ منگل کو لندن میں متعلقہ حکام سے معلومات حاصل کی جائیں گی اور اگر ضرورت پڑی تو ہائی کمیشن کے ذریعے برطانوی حکام سے رابطہ کیا جائے گا۔

تاہم ان کا کہنا تھا کہ طیارہ تحویل میں نہیں رہا اور ملازم بھی دو گھنٹے کے بعد رہا کر دیے گئے۔ اب یہ معاملہ ایسا نہیں ہے کہ ہات کو طول دیا جائے۔

انھوں نے بتایا کہ طیارہ دوسرے عملے کے ساتھ تاخیر سے لندن سے پرواز کرچکا ہے اور اب لاہور میں لینڈ کرے گا۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں