کوئٹہ سے دو چینی باشندے اغوا کر لیے گئے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ سے دو چینی باشندوں کو اغوا کر لیا گیا۔ مغویوں میں ایک خاتون اور ایک مرد شامل ہیں۔

کوئٹہ پولیس کے ذرائع کے مطابق دونوں چینی باشندوں کے اغوا کا واقعہ جناح ٹاؤن میں پیش آیا۔

ان ذرائع کے مطابق ایک چینی مرد اور دو خواتین جناح ٹاؤن کے علاقے میں رہائش پذیر تھے۔

کوئٹہ میں بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق پولیس نے انھیں بتایا ہے کہ چینی باشندے ایک لینگویج سینٹر میں چینی زبان پڑھاتے تھے۔

پولیس ذرائع کے مطابق وہ خریداری کے لیے مارکیٹ سے واپس آرہے تھے کہ ایک گاڑی میں سوار مسلح افراد نے انھیں روکا۔

مسلح افراد نے تینوں کو اغوا کرنے کے لیے ان کو گاڑی میں بٹھانے کی کوشش کی لیکن ایک چینی خاتون بچ نکلی۔

تاہم مسلح افراد ایک مرد اور ایک خاتون کو اغوا کرکے نامعلوم کی جانب لے جانے میں کامیاب ہو گئے۔

پولیس ذرائع نے بتایا کہ ایک عام شہری نے دونوں چینی باشندوں کو بچانے کی کوشش کی لیکن مسلح افراد نے اسے ٹانگ پر گولی مارکر زخمی کر دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دو ہفتے کے دوران بلوچستان کے کسی علاقے سے یہ اغوا کا تیسرا بڑا واقعہ ہے

تاحال دونوں چینی باشندوں کے اغوا کے محرکات معلوم نہیں ہو سکے۔

پولیس اور دیگر سیکورٹی فورسز نے ان کی بازیابی کے لیے کوششیں شروع کردی ہیں۔

دو ہفتے کے دوران بلوچستان کے کسی علاقے سے یہ اغوا کا تیسرا بڑا واقعہ ہے۔

تین روز قبل ضلع نصیر آباد کے علاقے ڈیرہ مراد جمالی سے ایک ہندو تاجر کو اغوا کیا گیا جبکہ اس سے پہلے سرحدی شہر چمن سے بھی ایک تاجر کو اغوا کیا گیا تھا۔

مارچ کے مہینے میں کوئٹہ شہر سے بلوچستان کے سیکریٹری سیکنڈری ایجوکیشن عبد اللہ جان کو بھی اغوا کیا گیا تھا جن کی بازیابی تاحال ممکن نہیں ہو سکی۔

اسی بارے میں