’ڈیزائن بنا کر داڑھی کی توہین نہ کی جائے‘

داڑھی، فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ iStock
Image caption حجاموں کو داڑھیوں کے ڈیزائن نہ بنانے کی ہدایت کی گئی ہے

پاکستان کے صوبے بلوچستان کے ضلع گوادر کے شہر اوڑماڑہ میں میونسپل کمیٹی نے حجاموں کو داڑھیوں کے ڈیزائن نہ بنانے کی ہدایت کی ہے اور کہا ہے کہ داڑھی میں اسلامی کٹ بنایا جائے۔

اوڑماڑہ بلوچستان کا ساحلی شہر ہے، جس کے آس پاس نیول بیس اور کیڈٹ کالج بھی واقع ہیں۔ یہ شہر اوڑماڑہ کینٹ اور سول آبادی کی میونسپل کمیٹی پر مشتمل ہے جس کی سویلین آبادی 35 ہزار کے قریب بتائی جاتی ہے۔

’فضائیہ کے مسلمان ملازم داڑھی نہیں رکھ سکتے‘

میونسپل اوڑماڑہ کے چیئرمین عامر اقبال نے بی بی سی کو بتایا کہ ماہِ رمضان میں شہر میں اشیائے خورد و نوش کے نرخ کے تعین کے لیے بدھ کو اجلاس طلب کیا گیا تھا، جس میں دکانداروں کے علاوہ حجام بھی شریک تھے۔ اس اجلاس میں حجاموں کو ہدایت کی گئی کہ داڑھی کی توہین نہ کی جائے۔

جمعیت علمائے اسلام فضل الرحمان گروپ کے رکن مولوی محمد امین کی نشاندہی پر یہ ہدایت جاری کی گئی۔

مولوی محمد امین نے بی بی سی کو بتایا کہ انھوں نے حجاموں کو ہدایت کی ہے کہ جو شخص داڑھی رکھنا چاہے وہ رکھے اور جو شیو کرنا چاہے وہ کرے لیکن داڑھی کے ڈیزائن نہ بنائے جائیں۔

’کچھ لڑکے فیشن کے طور پر چہرے پر سانپ کی طرح لکیریں اور نقشے بناتے ہیں، جو درست نہیں ہے۔ ہم نے حجاموں کو کہا ہے کہ یہ فیشن وغیرہ نہ کرو، جو داڑھی نہیں رکھتا تو نہ رکھے لیکن توہین تو نہ کرے۔‘

مولوی محمد امین نے بتایا کہ عام لوگوں نے ان سے شکایت کی تھی جس کی بنیاد پر انھوں نے حجاموں کو یہ ہدایت کی ہے، اب اس پر وہ زبردستی عمل درآمد نہیں کرا سکتے کیونکہ ان کے پاس قانونی اختیارات نہیں اس لیے انھوں نے زبانی ہدایت جاری کی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں