کوئٹہ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ، تین پولیس اہلکار ہلاک

کوئٹہ تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کوئٹہ شہر میں ڈیڑھ ہفتے کے دوران پولیس اہلکاروں پر حملے کا یہ دوسرا واقعہ ہے

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں حکام کے مطابق ایک حملے میں تین پولیس اہلکار ہلاک اور ایک شہری زخمی ہوا۔

کوئٹہ میں بی بی سی کے نامہ نگار محمد کاظم کے مطابق پولیس اہلکاروں پر حملے کا واقعہ شہر کے علاقے سریاب میں چکی شاہوانی کے ناکے پر پیش آیا۔

کوئٹہ پولیس کے ایک اہلکار نے بتایا کہ اس علاقے میں ایک ناکے پر پولیس اہلکار تعینات تھے۔

نامعلوم مسلح افراد نے پولیس اہلکاروں پر حملہ کیا جس کے نتیجے میں ایک پولیس اہلکار موقع پر ہلاک جبکہ دو پولیس اہلکاروں سمیت تین افراد زخمی ہوئے جبکہ زخمی ہونے والا تیسرا شخص راہگیر تھا ۔

حملہ آور موٹر سائیکل پر تھے جو کہ اس واقعے کے بعد فرارہوگئے۔

زخمیوں کو علاج کے لیے سول ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں دونوں پولیس اہلکار زخموں کی تاب نہ لاکر چل بسے۔

پولیس اہلکار کے مطابق یہ ٹارگٹ کلنگ کا واقعہ ہے جبکہ شدت پسند تنظیم لشکر جھنگوی العالمی نے اس حملے کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

کوئٹہ شہر میں ڈیڑھ ہفتے کے دوران پولیس اہلکاروں پر حملے کا یہ دوسرا واقعہ ہے۔ اس سے قبل ہدہ کے علاقے میں ایک حملے میں پولیس کا ایک ڈی ایس پی ہلاک اور ایک سب انسپیکٹرزخمی ہوا تھا ۔

رواں سال کے دوران پولیس اہلکاروں پر یہ پانچواں حملہ ہے ۔

مجموعی طور پر رواں سال کے دوران ان حملوں میں سات پولیس اہلکار ہلاک ہوئے ہیں۔

گذشتہ سال بھی بم دھماکوں اور ٹارگٹ کلنگ کے دیگر واقعات میں کوئٹہ سمیت بلوچستان کے دیگر علاقوں میں ڈیڑھ سو سے زائد پولیس اور دیگر سیکورٹی اداروں کے اہلکار ہلاک ہوئے تھے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں