میچ جیتنے کی خوشی میں ہوائی فائرنگ، درجنوں زخمی

کرکٹ تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption پولیس نے ہوائی فائرنگ کرنے کے جرم میں تقربناً 80 کے قریب افراد کو گرفتار کرلیا ہے

چمپئینز ٹرافی کے فائنل میں پاکستان کرکٹ ٹیم کی انڈیا کے خلاف تاریخی کامیابی حاصل کرنے کی خوشی میں ملک کے مختلف شہروں میں لوگوں کی طرف سے شدید ہوائی فائرنگ کی گئی جس میں درجنوں افراد زخمی ہوئے ہیں۔

پشاور سے بی بی سی کے نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئی کے مطابق زخمیوں میں بعض کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے جبکہ پولیس نے ہوائی فائرنگ کرنے کے جرم میں تقربناً 80 کے قریب افراد کو گرفتار کرلیا ہے۔

ملک کے مختلف شہروں سے موصول ہونے والے اطلاعات کے مطابق اتوار کی رات پاکستان کی طرف سے انڈیا کے خلاف فائنل میچ میں کامیابی حاصل کرنے کے بعد مختلف شہروں میں ہوائی فائرنگ کا ایک سلسلہ شروع ہوا جو رات گئے تک وقفے وقفے سے جاری رہا۔

فائرنگ کے سب سے زیادہ واقعات خیبر پختونخوا میں پیش آئے جہاں صوبائی دارالحکومت پشاور اور ضلع مردان میں مجموعی طورپر ہوائی گولی لگنے سے کم سے کم 45 افراد زخمی ہوئے۔

پشاور پولیس کے ایک ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ شہر بھر میں بیس سے زیادہ افراد گولی لگنے کا شکار ہوئے جن میں بچے بھی شامل ہیں۔ انھوں نے کہا کہ فائرنگ اور غیرقانونی اسلحہ رکھنے کے جرم میں 60 افراد کو گرفتار کرلیا گیا ہے جن کے خلاف مقدمات درج کرلئے گئے ہیں۔

ادھر صوبے کے دوسرے بڑے شہر مردان میں پولیس کا کہنا ہے کہ ہوائی گولی لگنے کے واقعات میں کم سے کم آٹھ افراد زخمی ہوئے جبکہ 45 افراد کو ناجائز اسلحہ رکھنے اور فائرنگ کرنے کے جرم میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

ملک کے سب سے بڑے شہر کراچی میں بھی پاکستان کی کامیابی کے خوشی میں شہر فائرنگ سے گونج اٹھا، عمارتوں کی چھتوں اور گلیوں سے فائرنگ کی گئی، جس میں کم از کم تین افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

کراچی میں بی بی سی کے نامہ نگار ریاض سہیل کے مطابق سرجانی کے علاقے میں مسمات سعدیہ نامعلوم سمت سے آنے والی گولی لگنے سے زخمی ہوگئیں اسی طرح مدینہ کالونی نیو کراچی میں مسمات خدیجہ زخمی ہوگئی ہیں۔

نجی نیوز چینل 92 کی ڈی ایس این جی کا سب انجنیئر شارق نامعلوم سمت سے آنے والی گولی کا شکار بن گئے، شارق پاکستان ٹیم کے کپتان سرفراز کے گھر کے باہر کوریج کے لیے موجود تھے، جہاں انھیں سر میں گولی لگی۔ ان کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔

خیال رہے کہ پاکستان میں اکثر اوقات کھیلوں میں کامیابی اور عید الفطر کا چاند نظر آنے پر فائرنگ کی جاتی ہے جس میں بیشتر اوقات ہلاکتیں ہوتی رہی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں