جناح کا بلوچ قبائلیوں سے وعدہ

ڈان گیارہ اگست تصویر کے کاپی رائٹ British Library
Image caption 'اب جبکہ ہم نے اپنی منزل حاصل کرلی ہے اور بنانے کا کام شروع ہوگیا۔ میں بلوچستان اور ڈیرہ غازی خان کا قبائلیوں کو مبارکباد بھیجنا چاہتا ہوں۔'

(پندرہ اگست تک آپ ہر روز تین اخبارات ڈان، دی ہندوستان ٹائمز اور ایسٹرن ٹائمز میں 70 برس پہلے شائع ہونے والےخبروں کی جھلکیاں یہاں پڑھ سکیں گے)

ڈان

(کراچی، سنیچر) مسٹر محمد علی جناح، گورنر جنرل آف پاکستان نے بلوچستان کے قبائلیوں کے نام ایک پیغام میں ان کو یقین دہانی کروائی ہے کہ بلوچستان میں قوانین جوں کے توں رہیں گے اور ان کے 'رواج' میں کوئی مداخلت نہیں ہوگی۔

* ’تقسیم کے زخم کی چبھن 70 برس بعد بھی کم نہ ہو سکی‘

* ’جاتی عمرہ والوں کا دل شریف خاندان کے لیے دھڑکتا ہے‘

بیان کا متن: 'اب جبکہ ہم نے اپنی منزل حاصل کرلی ہے اور بنانے کا کام شروع ہوگیا۔ میں بلوچستان اور ڈیرہ غازی خان کا قبائلیوں کو مبارکباد بھیجنا چاہتا ہوں۔'

'میں حکومت پاکستان کی طرف سے انہیں یقین دہانی کروانا چاہتا ہوں کہ 15 اگست 1947 کے بعد تمام معاہدے اور الاؤنس اسی طرح جاری رہیں گے جب تک کہ قبائل کے ساتھ صلاح مشورہ نہیں ہوجاتا۔ اس وقت تک بلوچستان کے قوانین میں کسی قسم کی تبدیلی نہیں ہوگی اور نہ 'رواج' میں تبدیلی کی اجازت دی جائے گی۔

'بلوچستان کے قبائل نے پاکستان کا حصہ بننے کے لیے پورے عزم کا اظہار کیا ہے، اسی مسلم ریاست میں ان کا خیر مقدم کیا جائے گا اور خوشحالی اور ترقی کے راستے پر چلنے میں ان کی مدد دی جائے گی۔'

پاکستان سپیشل ٹرین دھماکے کا شکار

(کراچی،اتوار)

دلی سے سنیچر کی صبح روانہ ہونے والی پاکستان سپیشل ٹرین گزشتہ رات بھٹنڈہ کے قریب دھماکے کی وجہ سے پٹڑی سے اتر گئی۔ دو بوگیاں زیر آب آنے سے چار افراد موقع پر ہی ہلاک ہو گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ British Library
Image caption گاندھی نے کہا کہ انہوں نے پوری زندگی پورے دل کے ساتھ دونوں کمیونیٹیز کی خدمت کی ہے

ہندوستان ٹائمز

گاندھی کا کلکتہ کے فساد زدہ علاقوں کا دورہ

مہاتما گاندھی نے اپنے اُنہی مسلمان دوستوں کی درخواست پر، جو چاہتے تھے کہ وہ متاثرہ علاقوں کا دورہ کریں، کچھ دیر کے لیے نواکھلی کا دورہ ملتوی کر دیا ہے۔

آج پوجا کے بعد تقریر کرتے ہوئے گاندھی جی نے کہا کہ وہ انڈیا کے اس اہم شہر میں حالات ٹھیک کرنے کے لیے کچھ کرنا چاہتے ہیں۔

گاندھی جی نے کہا کہ انھوں نے پوری زندگی پورے دل کے ساتھ دونوں کمیونیٹیز کی خدمت کی ہے۔ انھوں نے کہا کہ اب آزادی کے قریب پہنچ کر جب دونوں پر پاگل پن طاری ہے تو وہ اپنے آپ کو خدا کے حوالے کرتے ہوئےسب کچھ کریں گے کیونکہ وہ یہ پاگل پن نہیں برداشت کر سکتے۔

اسی بارے میں