میران شاہ میں ڈرون حملہ، چار ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption شمالی وزیرستان میں کچھ عرصے سے ڈرون حملوں میں کمی واقع ہوئی تھی

پاکستان کے قبائلی علاقے شمالی وزیرستان میں امریکی جاسوس طیارے کے حملے میں چار شدت پسند ہلاک جبکہ دو زخمی ہوگئے ہیں۔

ہلاک ہونے والوں کا تعلق حافظ گل بہادر گروپ کے مقامی طالبان سے بتایا جاتا ہے۔

’دہشت گردی میں 2500، ڈرون میں 900 ہلاک‘

میرانشاہ میں ایک سرکاری اہلکار نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاورخان وزیرکو بتایا کہ منگل کی صُبح شمالی وزرستان کے صدر مقام میران شاہ میں شہر کے اندر درپہ خیل سرائے میں ایک امریکی جاسوس طیارے نے ایک مکان کو نشانہ بنایا۔

اس حملے میں چار افراد ہلاک اور دو زخمی ہوئے ہیں۔

سرکاری اہلکار مطابق امریکی ڈرون طیارے سے مکان پر دو میزائل فائر کیے گئے جس کے نتیجے میں مکان بھی مکمل طور پر تباہ ہو گیا۔انہوں نے کہا کہ نشانہ بننے والا مکان ایک گنجان آباد علاقے میں واقع ہے جس کی وجہ سے قریبی مکانوں کو بھی جُزوی نقصان پہنچا ہے۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ جس مکان پر ڈرون حملہ ہوا ہے وہ کافی عرصے سے شدت پسندوں کے زیر استعمال تھا۔

اہلکار نے بتایا کہ ہلاک ہونے والوں کا تعلق مقامی شدت پسندوں سے ہیں لیکن ابھی تک یہ معلوم نہیں کہ کیا اس میں کوئی اھم شخص شامل ہے یا نہیں۔ اہلکار کے مطابق مقامی طالبان نے لاشوں کو شہر سے باہر منتقل کر دیا ہے۔

اسی بارے میں