چمن: امریکی ڈرون گر کر تباہ

ڈرون
Image caption ابتدائی تحقیقات کے مطابق طیارہ فنی خرابی کے باعث گراہے تاہم طیارہ گرنے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے

پاکستان کے سرحدی شہرچمن میں پاک افغان سرحد کے قریب ایک امریکی جاسوس طیارہ گرکرتباہ ہواہے۔ تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہواہے۔

کوئٹہ سے بی بی سی کے نامہ نگار ایوب ترین کے مطابق جمعرات کے روز امریکی جاسوسی طیارہ تقربیا پانچ بجے سے پاک افغان سرحد پر پرواز کرتارہا اورافطاری کے وقت باب دوستی سے تین سوکلومیٹر دور ایف سی قلعہ کے قریب گرکرتباہ ہوا ہے۔ جس کے بعد فرنٹیئرکور کےقلعے قریب گر کرتباہ ہوگیا۔ بعد میں فرنٹیئرکور کے اہلکاروں نےنے تباہ شدہ طیارہ کو گھیرے میں لیا تاہم کوئی جانی نقصان نہیں ہواہے۔

چمن میں ایف سی ذرائع کےمطابق ڈیڑھ گز لمبی طیارے میں دو کمیرے اور جاسوسی کے دیگر جدید آلات نصب تھے لیکن کوئی میزائل وغیرہ نصب نہیں تھا۔امریکہ کی بنی ہوئی اس جاسوسی طیارے پر(یو اےوی) تحریرہے۔

ایف سی ذرائع کے ابتدائی تحقیقات کے مطابق طیارہ فنی خرابی کے باعث گراہے تاہم طیارہ گرنے سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے اور نہ کسی نے اسکی ذمہ داری قبول نہیں کی ہے۔

خیال رہے کہ امریکی جاسوسی طیاروں کی جانب سےگزشتہ دس سال سے افغانستان اور پاکستان میں طالبان کے خلاف ڈراون حملوں سلسلہ جاری ہے لیکن بلوچستان کے حدود میں پہلی بار کوئی امریکی جاسوسی طیارہ گرکر تباہ ہواہے۔ جبکہ اس سے قبل پاکستان کے قبائلی علاقوں میں کئی طیارے گرے ہیں جن میں سے اکثر کی ذمہ داری پاکستانی طالبان نے قبول کی ہے۔

لیکن امریکی جاسوس اورنیٹوکے جیٹ طیاروں کی جانب سے کئی بار بلوچستان کے راستے پاکستان کی سرحدی حدود کی خلاف ورزی ہوئی ہے جس پر پاکستان نے اس پر امریکہ اور افغانستان میں نیٹو افواج سے احتجاج بھی کیا ہے۔

اسی بارے میں