کوہستان: پینتیس ہلاک، تیس کی تلاش جاری

Image caption طغیانی کے نتیجے میں پانی کے ریلے میں پینسٹھ افراد بہہ گئے تھے

پاکستان کے شمالی علاقے کوہستان میں طوفانی بارشوں کے بعد آنے والے سیلابی ریلوں میں بہہ جانے والے پینسٹھ افراد میں سے پینتیس کی لاشیں نکال لی گئی ہیں۔

حکام کے مطابق تیس افراد تاحال لاپتہ ہیں اور ان کی تلاش جاری ہے۔

ادھر پاکستان کے سرکاری ٹی وی کے مطابق اس حادثے کے دو دن بعد اب پاک فوج کے دو ہیلی کاپٹر امدادی کارروائیوں میں حصہ لینے کے لیے کندیاں پہنچ گئے ہیں۔

کوہستان کی تحصیل کندیاں کے علاقے گبرال میں بدھ کی رات شدید بارشوں کی وجہ سے تودے گرے اور نالے میں طغیانی آئی تھی اور اس طغیانی کے نتیجے میں پانی کے ریلے میں پینسٹھ افراد بہہ گئے تھے۔

کوہستان میں پولیس حکام نے جمعرات کو بی بی سی کے نامہ نگار ذوالفقار علی کو بتایا تھا کہ اب تک مختلف مقامات سے مقامی لوگوں نے پینتیس افراد کی لاشیں نکالی ہیں جبکہ کم از کم تیس افراد اب بھی لاپتہ ہیں جن کی تلاش جاری ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ مرنے والوں بچے عورتیں مرد سبھی شامل ہیں ۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گبرال ایک دورافتادہ علاقہ ہے اور کوہستان کے ضلعی ہیڈ کوارٹر سے چار پانچ دن کی مسا فت پر ہے اور فوری طور پر صرف ہیلی کاپڑ کے ذریعے ہی اس علاقے میں پہنچا جاسکتا ہے۔

اس سے پہلے کوہستان کے ضلعی رابط افسر امتیاز حسین شاہ نے بی بی سی کو بتایا تھا کہ زمینی راستے سے بھی امدادی ٹیمیں ضروری اشیاء اور ادویات لے کر روانہ کر دی گئی ہیں لیکن انہیں پہنچنے میں چار سے پانچ روز لگ سکتے ہیں۔

اسی بارے میں