’ڈی جی سندھ رینجرز کی خدمات حاضر ہیں‘

سرفراز شاھ
Image caption آئی ایس پی ار کے مطابق کہ سرفراز شاھ واقعے میں ملوث افراد کو اب سزا مل چکی ہے

پاکستانی فوج نے ایک بیان میں کہا ہے کہ کراچی کے موجودہ حالات دیکھتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل سندھ رینجرز کی خدمات حکومت پاکستان کے لیے حاضر ہیں۔

پاکستانی فوج کے شعبہ تعلقات عامہ آئی ایس پی آر کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ ڈی جی سندھ رینجرز میجر جنرل اعجاز چوہدری کی خدمات حکومتِ پاکستان کے لیے حاضر ہیں۔

پریس ریلیز میں کہا گیا ہے کہ میجر جنرل اعجاز چوہدری کو سپریم کورٹ کے احکامات کے مطابق ڈی جی سندھ رینجرز کے عہدے سے ہٹا دیا گیا تھا۔

سپریم کورٹ نے یہ احکامات کراچی میں ایک شہری سرفراز شاھ کے قتل کے واقعے کے بعد دیے تھے۔

آئی ایس پی ار کے مطابق کہ سرفراز شاھ واقعے میں ملوث افراد کو اب سزا مل چکی ہے اور کراچی کے حالات دیکھتے ہوئے میجر جنرل اعجاز چوہدری کی خدمات حکومتِ پاکستان کے لیے دوبارہ حاضر ہیں۔

یاد رہے کہ کراچی میں رینجرز کے ہاتھوں نوجوان کے قتل پر دس جون کو چیف جسٹس سپریم کورٹ افتخار محمد چوہدری نے ڈی جی سندھ رینجرز اور آئی جی سندھ کو تین روز میں ہٹانے کاحکم دیا تھا۔

چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے یہ احکامات اس واقعے کا از خود نوٹس کی سماعت کے دوران دیے تھے۔

اس از خود نوٹس کی سماعت چیف جسٹس سمیت جسٹس جاوید اقبال، جسٹس ناصر الملک، جسٹس طارق پرویز اور جسٹس امیرہانی مسلم نے کی تھی۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا تھا کہ اگر تین روز میں یہ دو افسران نہ ہٹائے گئے تو ان کی تنخواہ روک دی جائے گی۔

ان احکامات کے بعد حکومت نے ڈی جی رینجرز اور آئی جی سندھ کو عہدوں سے ہٹا دیا تھا۔

اسی بارے میں