عبداللہ پنواڑی کا نائن الیون!

ان دنوں بی بی سی سمیت پورے عالمی میڈیا میں نائن الیون ہفتہ منایا جارہا ہے۔ لیکن یقین کریں عبداللہ پنواڑی پر نائن الیون نے کوئی اثر نہیں ڈالا۔

بقولِ عبداللہ پنواڑی، نائن الیون سے پہلے بھی میرا کھوکھا چار بائی چھ فٹ کا تھا، آج بھی اتنا ہی ہے۔نائن الیون سے پہلے بھی پولیس اور سیاسی تنظیموں کو پان ، سگریٹ اور پیسوں کی صورت میں لگ بھگ دو سو روپے فی ہفتہ بھتہ دیتا تھا ۔ آج مہنگائی بڑھ گئی ہے تو پانچ سو روپے بھتہ دیتا ہوں۔

نائن الیون سے پہلے بھی اپنے بچوں کو پرائیویٹ سکول میں نہیں بھیج سکتا تھا ۔آج بھی میرا تیسرا بیٹا پیلے اسکول میں پڑھتا ہے۔ پہلا بچہ آٹھویں کے بعد بھاگ کر کسی سیاسی تنظیم کے ہتھے چڑھ کر مفرور ہے اور دوسرا پانچویں کے بعد مدرسے میں داخل ہوگیا جہاں اسے کھانا ، رہائش اور تعلیم مفت ہاتھ آئی اور ان دنوں وہ علاقے میں ایک اور مسجد کے لئے چندہ جمع کررہا ہے۔

نائن الیون سے پہلے میری تین سالہ بچی گھر کے قریب کھیلتے کھیلتے ایک کھلے نالے میں گر کے مرگئی اور نائن الیون کے بعد بیوی کی زچگی ایک دائی نے ایسی بگاڑی کہ وہ مزید بچے پیدا کرنے کے قابل نہیں رہی۔یہ نالہ آج بھی کھلا بہہ رہا ہے اور وہ دائی آج بھی زچگیاں بھگتا رہی ہے۔

نائن الیون سے پہلے ایک مرتبہ بلوے میں پھنس کر آنسو گیس کے شیل کا ٹکڑا کندھے پر لگنے سے زخمی ہوا اور نائن الیون کے بعد میرے اسی کھوکھے پر سامنے والے کالج کے لونڈوں کی لڑائی میں ایک گولی کان چھوتی ہوئی گزر گئی۔

نائن الیون سے پہلے بھی میرا خیال تھا کہ اگر حکومت چاہے تو نا ہڑتال ہوسکتی ہے ، نا بندہ مر سکتا ہے اور نا ہی غنڈے کھلے گھوم سکتے ہیں۔نائن الیون کے بعد بھی میں سمجھتا ہوں کہ حکومت چاہے تو نا بم دھماکے ہوسکتے ہیں ، نا ٹارگٹ کلنگ ہوسکتی ہے اور نا امریکہ کچھ بگاڑ سکتا ہے۔

میں نے عبداللہ سے پوچھا کہ خود نائن الیون کے سانحے کے بارے میں اس کا کیا خیال ہے؟ کہنے لگا کہ بڑے صاحب مجھے تو یہ ایک نیا ٹوپی ڈرامہ لگتا ہے جس کا مقصد اور زیادہ لوٹ مار ہے۔سارا چکر یہ ہے کہ ایک روپیہ لگا کر پانچ روپے کیسے کمائے جائیں۔ اس ٹوپی ڈرامے میں امریکہ سے لے کر ایس ایچ او تک سب شامل ہیں۔

امریکہ نے تو اب جا کے دیکھا ہے لیکن ہم جیسے تو جب سے پیدا ہوئے نائن الیون ہی دیکھ رہے ہیں۔ کوئی مار کے کما رہا ہے ، کوئی مرکے تو کوئی مروا کے کما رہا ہے ۔

زندگی بھی دھندا ہے اور موت بھی دھندا اور آدمی صرف گورکھ دھندا ۔۔۔۔۔

آپ بتائیں کیا خدمت کروں ؟ پان یا سگریٹ یا پھر گٹکا؟

اسی بارے میں