کابینہ اجلاس، سندھ سمیت دیگر معاملات پر بحث

کابینہ کا اجلاس: فائل فوٹو تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption کابینہ اجلاس میں بتایا گیا کہ کراچی حالات میں بہتری آئی ہے

وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کی صدارت میں کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں کراچی کی موجودہ صورتحال، سندھ میں حالیہ بارشوں سے ہونے والی تباہی اور دیگر معاملات پر بحث کی گئی۔

وزیراعظم ہاؤس سے جاری ہونے والے ایک بیان کے مطابق کابینہ نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کو ہدایت دی ہے کہ سیاسی وابستگیوں کو بالائے طاق رکھتے ہوئے جرائم پیشہ عناصر کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔

اسلام آباد سے نامہ نگار حفیظ چاچڑ کے مطابق وزیرِ داخلہ رحمان ملک نے کابینہ کو کراچی کی صورتحال پر بریفگ دی اور بتایا کہ حکومت سندھ، پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کے آپس میں تعاون کی وجہ سے صورتحال میں بہتری آ رہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ کراچی میں جرائم پیشہ عناصر کے خلاف آپریشن مثبت طریقے سے جاری ہے اور پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں نے کئی افراد کو گرفتار کیا ہے جن سے اہم معلومات مل رہی ہیں۔

رحمان ملک نے کابینہ کو بتایا کہ کراچی میں آپریشن کے دوران بلا امتیاز کارروائی کی جا رہی ہے۔ کابینہ نے اس سلسلے میں حکومتِ سندھ، قانون نافذ کرنے والے اداروں، پولیس اور وزارت داخلہ کی کاوشوں کو سراہا۔

کابینہ نے کراچی میں پائیدار بنیادوں میں امن قائم کرنے کی بھی ہدایت کی۔ کابینہ نے کراچی اور بلوچستان کی صورتحال سے متعلق بنائی جانے والی پارلیمانی کمیٹی کے فیصلے کو سراہا جو کراچی اور بلوچستان کی موجودہ صورتحال کی بہتری کے لیے ایک جامع رپورٹ پارلیمنٹ میں پیش کرنے والی ہے۔

سندھ میں حالیہ بارشوں سے ہونے والی تباہی پر بھی اجلاس میں بحث کی گئی۔ کابینہ کو بتایا گیا کہ وفاقی حکومت اور این ڈی ایم اے نے بارشوں سے متاثرہ افراد کےلیے اٹھائیس ہزار ٹینٹ، مناسب مقدار میں خوراک اور ادویات فراہم کی ہیں۔

وزیراعظم نے این ڈی ایم اے کے چیئرمین کو ہدایت کی کہ وہ متاثرہ افراد کی امداد کے لیے حکومتِ سندھ سے مکمل تعاون کریں تاکہ ہر شخص کو مدد مل سکے۔ اجلاس میں بتایا گیا کہ کابینہ نےٰ باقی صوبوں کے وزرائے اعلیٰ کو کہا ہے کہ وہ دو دو کروڑ روپے متاثرین کی امداد کےلیے سندھ کے وزیراعلی کو دیں۔

دوسر ی طرف صدر آصف علی زرداری نے بھی متاثرہ افراد کی امداد کےلیے بین الاقوامی برادری سے اپیل کی ہے۔

اسی بارے میں