کرّم ایجنسی:مسافر گاڑی پر حملہ 3 ہلاک

کرم ایجنسی
Image caption کرم ایجنسی میں مسافر گاڑیوں پر حملے معمول بن گئے ہیں۔

پاکستان کے قبائلی علاقے کُرم ایجنسی میں نامعلوم افراد کی جانب سے ایک مُسافر گاڑی پر حملے میں تین افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔ ہلاک ہونے والے لوگوں کا تعلق شیعہ مسلک سے بتایا جاتا ہے۔

کُرم ایجنسی میں ایک سرکاری اہلکار نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاورخان وزیر کو بتایا کہ اتوار کو تحصیل علی زئی کے علاقے مرو خیل میں نامعلوم مُسلح شدت پسندوں نے ایک مُسافر گاڑی پر اس وقت حملہ کیا جب وہ گاؤں مرو خیل سے علی زئی جا رہی تھی۔

انہوں نے بتایا کہ حملے میں تین افراد ہلاک جبکہ ایک زخمی ہوا ہے۔ اہلکار کہنا تھا کہ حملے کے بعد مقامی لوگ وہاں پہنچے ہیں لیکن ابھی تک یہ معلوم نہیں کہ حملہ آور کون تھے اور انھوں نے حملہ کیوں کیا ہے۔

سرکاری اہلکار نے بتایا کہ گاڑی میں سوار ہلاک ہونے مُسافروں کا تعلق شیعہ مسلک سے تھا جن کی لاشوں کو مرو خیل منتقل کردیا گیا ہے۔

اہلکار کے مطابق حملے میں گاڑی کو بھی نقصان پہنچا ہےاور یہ ایک نان کسٹم پیڈ گاڑی تھی۔

اہلکار کے مطابق یہ علاقہ صدہ سے تقریباً سولہ کلومیٹر شمال مشرق کی جانب واقع ہے اور اس علاقے میں شیعہ اکثریت کے لوگ آباد ہیں۔ اس علاقے میں سُنّی مسلک کے لوگوں کی آبادیاں نہیں ہیں۔ البتہ جس جگہ حملہ ہوا ہے اس علاقے میں ایک جنگل اور پہاڑی سلسلے واقع ہیں۔

واضح رہے کہ کُرم ایجنسی میں سُنّی اور شیعہ مسلک کے لوگوں کی مسافر گاڑیوں پر حملے ایک معمول بن گیا ہے اور درجنوں افراد ہلاک اور زخمی ہو چکے ہیں۔

اسی بارے میں