تھر: ریت میں دبا گولہ پھٹنے سے تین ہلاک

سندھ کے صحرائی علاقے اچھڑو تھر میں ریت میں دبا گولہ پھٹنے سے دو بھائیوں سمیت تین بچے ہلاک اور دس زخمی ہوگئے ہیں۔

یہ واقعہ کھپرو شہر سے پندرہ کلومیٹر پر واقعے میئو ٹھکر نامی گاؤں میں پیش آیا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ انیس سو اکہتر کی پاکستان بھارت جنگ کے دوران استعمال ہونے والا ایک مارٹر گولا ریت میں دبا ہوا تھا جو حالیہ بارشوں کے نتیجے میں ابھر آیا۔

ان کا کہنا ہے کہ بچے اس سے کھیل رہے تھے کہ گولا پھٹ گیا۔دھماکے کی آواز پر آس پاس کے لوگ موقع پر پہنچے اور زخمی بچوں کو کھپرو تحصیل ہسپتال پہنچایا گیا۔

تاہم سہولیات کے فقدان کی وجہ سے تین بچوں کو سول ہپستال حیدرآباد منتقل کرنا پڑا جہاں ان کی حالت تشویش ناک بتائی جا رہی ہے۔

کھپرو ہپستال میں زیرِ علاج چھ سالہ جواہر نے ٹیلیفون پر بی بی سی اردو کے ریاض سہیل کو بتایا کہ گولا چبھڑی ( تربوز کی شکل کا صحرائی پھل جو بارشوں کے بعد ہوتا ہے) جیسا تھا، جو ہمیں گاؤں کے باہر سے ملا۔

’ ہم اسے بال سمجھ کر لے آئے، صبح کو ریت ٹھنڈی تھی بچوں نے کہا کہ ریت سے گھروندے بناتے ہیں، اسی دوران ایک بچے نے گولا اٹھا کر نیچے پھینکا جو دھماکے سے پھٹ گیا‘۔

جواہر کے مطابق دھماکے کے بعد بچوں کے سر، بازو، چہرے اور پیٹ میں کوئی چیز لگی۔ ہلاک ہونے والوں تین بچوں میں پندرہ سالہ دلیپ اور آٹھ سالہ رمیش بھائی ہیں۔

دھماکے کے بعد پولیس نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا اور بم ڈسپوزل سکواڈ کو بھی طلب کر لیا گیا ہے۔