امریکی دھمکیوں کے خلاف قرارداد

فائل فوٹو
Image caption یہ قرارداد پیر کو پیش کی گئی (فائل فوٹو)

پاکستان کے صوبہ خیبر پختون خوا کی اسمبلی نے امریکی دھمکیوں کے خلاف ایک مشترکہ مزمتی قرار داد کے ذریعے سے اعلان کیا ہے کہ امریکہ یا نیٹو فورسز کی ’کسی بھی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔‘

پشاور میں بی بی سی کے رفعت اللہ اورکزئی کے مطابق پیر کی شام خیبر پختون خوا اسمبلی میں حکومت اور اپوزیشن جماعتوں کی طرف سے مشترکہ طورپر پیش کی گئی قرارداد میں کہا گیا ہے کہ امریکی حکومت اور فوجی جرنیل پاکستان پر بے بنیاد الزامات لگا رہے ہیں جس پر خیبر پختونخوا اسمبلی کے شدید تحفظات ہیں۔ قرار داد میں امریکی دھمکیوں کی شدید مزمت کرتے ہوئے حقانی نیٹ ورک کے ساتھ روابط اور ’پراکسی وار‘ سے متعلق امریکی الزامات کی سخت الفاظ میں تردید کی گئی۔

قرارداد کے مطابق دہشت گردی کے خلاف جاری جنگ میں پینتیس ہزار سے زائد شہری اور پانچ ہزار سکیورٹی اہلکاروں کی ہلاکت اور ساٹھ کروڑ ڈالر سے زائد اقتصادی نقصانات کے باوجود پاکستان کی قربانیوں کا اعتراف نہیں کیا گیا بلکہ ُالٹا پاک فوج اور حکومت پر بے جا دباؤ ڈالا جارہا ہے۔

قرارداد میں واضح کیا گیا ہے کہ ’قومی مفادات اور ملکی سالمیت پر کسی قسم کا کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا بلکہ پاکستان کے اٹھارہ کروڑ عوام فوج کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑے ہوکر امریکہ یا اس کے اتحادیوں کی طرف سےکسی قسم کی جارحیت کا منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔‘

خیبر پختون اسمبلی میں مشترکہ طورپر منظور کی گئی اس قرارداد میں وفاقی حکومت سے بھی مطالبہ کیا گیا ہے کہ امریکی سفیر کو دفتر خارجہ طلب کرکے انھیں ’ہمارے جذبات، احساسات اور احتجاج سے آگاہ کیا جائے۔‘

قبل ازیں اسمبلی کا اجلاس جاری تھا کہ اس دوران پیپلز پارٹی کے پارلمیانی رہنما عبد الاکبر خان نے کھڑے ہوکر سپیکر سے قرار داد پیش کرنے کی اجازت طلب کی۔ سپیکر کی طرف سے رولز معطل کرنے کے بعد تمام سیاسی جماعتوں کے پارلیمانی رہنماؤں اے این پی کے بشیر احمد بلور، مسلم لیگ (ق) کے نگہت اورکزئی اور قلند لودھی، جے یو آئی کے مفتی کفایت اللہ، مسلم لیگ (ن) کے جاوید عباسی، پی پی شیرپاؤ کے محمد علی اور اقلیتی امیدوار کشورکمار نے باری باری کھڑے ہوکر ایوان میں قراردار پیش کی جبکہ کسی امیدوار نے اسکی مخالفت نہیں کی۔

خیال رہے کہ پاکستان میں خیبر پختونخوا اب تک واحد اسمبلی ہے جس نے حالیہ امریکی دھمکیوں اور الزام تراشیوں کے خلاف مشترکہ قرارداد منظور کی ہے۔

اسی بارے میں