خضدار:بلوچ رہنماء کی ہلاکت کے خلاف ہڑتال

Image caption بلوچستان میں اس سے پہلے بھی سیاسی رہنماء فائرنگ کے واقعے میں ہلاک ہو چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے شہر خضدار میں بلوچستان نیشنل پارٹی کے رہنماء عبدالسلام ایڈووکیٹ کی ہلاکت کے خلاف شٹرڈاؤن ہڑتال کی جا رہی ہے۔

بدھ کی رات کو بلوچستان نیشنل پارٹی مینگل گروپ کے رہنماء اور جھالاوان بار ایسوسی ایشن کے صدر عبدالسلام ایڈووکیٹ اپنے بچوں کے ہمراہ خضدار ماڈل سکول کے قریب سے گزر رہے تھے کہ نامعلوم مسلح افراد نے ان کی گاڑی پرفائرنگ کردی۔

فائرنگ کے اس واقعے میں بلوچ رہنماء موقع پر ہلاک ہو گئے جب کہ ان کی بیٹی زخمی ہو گئی تھیں۔

نامہ نگار ایوب ترین کا کہنا ہے کہ عبدالسلام ایڈووکیٹ کی ہلاکت پر بلوچستان نیشنل پارٹی نے دس روزہ سوگ اور جمعرات کو خضدار میں شٹرڈاؤن ہڑتال کا اعلان کیا گیا تھا۔

واضح رہے کہ اس سے پہلے بھی صوبہ بلوچستان میں قوم پرست جماعتوں کے متعدد رہنماء فائرنگ کے واقعے میں ہلاک ہو چکے ہیں۔

چند دن پہلے انسانی حقوق کمیشن برائے پاکستان نے بلوچستان میں ٹارگٹ کلنگ، اغواء برائے تاوان اور لاپتہ افراد کی مسخ شدہ لاشیں ملنے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ صوبائی اور وفاقی حکومت مذہبی انتہاء پسندی کے واقعات کی روک تھام میں ناکام ہو چکی ہے۔

اسی بارے میں