کراچی: دھماکے میں دو افراد زخمی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption یہ بم دھماکہ تھا اوربم پل کے ساتھ نصب کیا گیا تھا: پولیس افسر

کراچی کے علاقے کالا پل پر ایک دھماکہ ہوا ہے جس میں کم سے کم دو افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

منگل کی صبح تقریباً ساڑھے دس بجے کے قریب یہ دھماکہ سنا گیا۔

ایس پی طارق دھاریجو کا کہنا ہے کہ یہ بم دھماکہ تھا اوربم پل کے ساتھ نصب کیا گیا تھا۔

انہوں نے بتایا کہ اس دھماکے میں دو افراد زخمی ہوگئے ہیں جبکہ پولیس نے علاقے کا محاصرہ کرلیا ہے۔

کراچی سے نامہ نگار ریاض سہیل نے بتایا کہ دھماکے کے بعد پل کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا۔ شاہراہ فیصل اور صدر سے آنے والی ٹریفک کالا پل کے ذریعے ڈفینس اور کورنگی جاتی ہے۔ جبکہ قریب ہی پاکستان بحریہ کی رہائشی کالونی اور فوج کے دفاتر واقع ہیں۔

دوسری جانب دسویں محرم کے ماتمی جلوس کی فضائی نگرانی جاری ہے۔

جلوس کی گزر گاہ ایم اے جناح روڈ، ایمپریس مارکیٹ، ریگل چوک اور پریڈی اسٹریٹ گزشتہ دو روز سے سیل ہیں اور تمام گلیوں کو کنٹینروں کی مدد سے بند کردیا گیا ہے جبکہ گزر گاہ پر پولیس اور رینجرز کے تقریباً چھ ہزار اہلکار تعینات ہیں۔

ماتمی جلوس کی سیکیورٹی کے تین حصار بنائے گئے ہیں جن میں پہلا حصار اسکاؤٹس کا ہے جس کے بعد ترتیب وار رینجرز اور پولیس اہلکار ہیں، جلوس کی گزر گاہ کی اونچی عمارتوں پر بھی پولیس اور رینجرز کے نشانہ باز تعینات کیے گئے ہیں، اس کے علاوہ دو ہیلی کاپٹروں کی مدد سے وقفے وقفے سے فضائی نگرانی کی جارہی ہے۔

وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک نے کراچی میں تخریب کاری کا خدشہ ظاہر کیا ہے اور ہدایت کی ہے کہ سائیکل سے لیکر ہر گاڑی کی تلاشی لی جائے۔

ادھر کوئٹہ میں بھی محرم کے جلوس کی گزرگاہ پر سخت سکیورٹی کے انتظامات کیے گئے ہیں جبکہ موبائل فون سروس صبح نو بجے سے دس بجے تک معطل کردی گئی ہے۔

اسی بارے میں