بھارت مخالف مہم کے لیے آٹو رکشہ کا سہارا

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption آٹو رکشا کے ذریعے مہم چلانا نہ صرف سستا بلکہ انتہائی کارآمد بھی ثابت ہوا ہے: یحیٰی مجاہد

پاکستان میں مختلف مذہبی جماعتوں نے بھارت کو تجارتی عرض سے پسندیدہ ترین ملک کا درجہ دینے کی حکومتی تجویز کے خلاف احتجاجی مہم چلانے کے لیے آٹو رکشاؤں کا سہارا لیا ہے اور اس مقصد کے لیے بھارت مخالف عبارتوں والے اشتہارات رکشاؤں پر آویزں کیے گئے ہیں۔

بھارت کے خلاف یہ مہم مختلف مذہبی جماعتوں پر مشتمل دفاع پاکستان کونسل کی طرف سے شروع کی گئی ہے اور اس مہم میں کالعدم تنظیم جماعت الدعوۃ پیش پیش ہے۔

کالعدم تنظیم کے ترجمان یحیٰی مجاہد نے کہنا ہے کہ ملکی حکمران تو امریکہ کے دباؤ میں آکر بھارت کو پسندیدہ ترین ملک کا درجہ دے رہے ہیں لیکن عوام کو معلوم ہونا چاہیے کہ پاکستان کا بھارت کے ساتھ کیا رشتہ ہے اور اسی وجہ سے یہ مہم چلانے کا فیصلہ کیا گیا۔

ترجمان کے مطابق اب تک لاہور شہر میں اس مہم کے لیے دو ہزار کے قریب رکشاؤں پر فلیکس یا اشتہارات نصب کیے گئے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ آٹو رکشہ کے ذریعے مہم چلانا نہ صرف سستا بلکہ انتہائی کارآمد بھی ثابت ہوا ہے۔

ان کے بقول ’ایک اشتہار یا فلیکس کو کسی چوک یا شاہراہ پر لگایا جائے تو اس کا اثر محدود رہتا ہے جبکہ اس کے برعکس ایک رکشہ شہر کے مختلف علاقوں میں چکر لگاتا ہے اس طرح ان کا پیغام ہر جگہ پہنچ جاتا ہے‘۔

جماعت الدعوۃ کے ترجمان نے بتایا کہ ایک تشہیری بورڈ کی تیاری پر ان کا خرچ ایک سو پچاس روپے ہے اور بقول ان کےاس مہم کے لیے رکشہ مالکان نے اشتہار لگانے کے لیے ان سے کوئی معاوضہ نہیں لیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اشتہار لگانے کی وجہ رکشے کی بدنمائی چھپانا ہے: رکشہ مالکان

ادھر اس مہم شامل ہونے والے کچھ رکشہ ڈرائیوروں کا کہنا ہے کہ ان کے رکشے کے پچھلے حصے پر لگے ’ کور‘ پھٹ چکے تھے اور اس فلیکس کو لگانے سے رکشہ کی یہ بدنمائی ختم ہوگئی ہے۔

اس بھارت مخالف مہم کے لیے چار قسم کے مختلف فلیکس تیار کیے گئے ہیں جن پر سمجھوتہ ٹرین حادثہ ، بھارتی گجرات میں مسلمانوں پر تشدد کی تصاویر کے علاوہ بابری مسجد کی تصاویر بنائی گئیں ہیں۔

ان اشتہارات پر ’بھارت سے رشتہ کیا نفرت کا ، انتقام کا‘ اور ’شہید ہم سے کہہ رہے ہیں لہو ہمارا بھلا نہ دینا‘ جیسی عبارتیں درج ہیں۔ ایسے اشتہارات بھی موجود ہیں جن میں ’دریاؤں پر ڈیم بنا کر پاکستان کو بنجر کرنے والے بھارت دوست نہیں دشمن‘ کی عبارت درج ہے۔

یحیٰی مجاہد نے بتایا کہ مزید ایسے رکشہ مالکان کو تلاش کیا جارہا ہے جو رضا کارانہ طور پر ان کے اشتہارات اپنے رکشاؤں پر آویزاں کریں اور اس طرح مزید دو ہزار رکشے ان کی بھارت کے خلاف مہم میں شامل ہوجائیں گے۔

اسی بارے میں