ہنگو: جھڑپ میں پانچ افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption ہنگو میں اس سے پہلے بھی اغواء کے متعدد واقعات پیش آ چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخوا کے ضلع ہنگو میں پولیس کے مطابق نامعلوم مُسلح افراد کے دو پولیس اہلکاروں کو اغواء کرنے کے واقعے کے بعد ایک جھڑپ میں تین پولیس اہلکاروں سیمت پانچ افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

ہنگو میں ایک پولیس اہلکار میر عباس خان نے بی بی سی کے نامہ نگار دلاورخان وزیر کو بتایا کہ تحصیل ٹل کے علاقے دوآبہ میں نامعلوم مُسلح افراد نے پیر کی صبح دو پولیس اہلکار کو اغواء کیا اور بعد میں پولیس اور مقامی امن کمیٹی کے رضاکاروں کے بھاری نفری نے اغواء کاروں کا پیچھا کیا۔

انہوں نے کہا کہ اس دوران پولیس اور اغواء کاروں کے مابین فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس میں تین پولیس اہلکاروں سمیت پانچ افراد ہلاک ہو گئے ہیں۔

ہلاک ہونے والوں میں امن کمیٹی کے ایک رضاکار اور ایک اغواء کار بھی شامل ہیں تاہم مغوی پولیس اہلکاروں کو بعد میں بازیاب کرا لیا گیا۔

واضح رہے کہ پیر کی صبح پولیس اہلکار نجی بینک کی ایک گاڑی میں کیش لے کر جا رہے تھے کہ ایک پہاڑی سلسلے میں نامعلوم مُسلح افراد نے ان پر حملہ کردیا، جس کے نتیجے میں دو پولیس اہلکاروں کو اغواء کر لیاگیا۔

لیکن اس واقعے میں گاڑی میں رکھا ہوا کیش محفوظ رہا تھا کیونکہ وہ گاڑی کے اندر ایک مضبوط لاکر میں پڑا تھا۔

پولیس کے مطابق جس علاقے میں یہ واقعہ پیش آیا ہے یہ علاقہ دوآبہ اور کاربوغہ شریف کے درمیان ایک پہاڑی سلسلہ ہے جس میں سکیورٹی فورسز اور پولیس اہلکاروں پر اکثر اوقات شدت پسندوں کی طرف سے حملے ہوتے رہے ہیں۔

یاد رہے کہ ہنگو شہر قبائلی علاقے اورکزئی ایجنسی کے سنگم پر واقع ایک حساس ضلع ہے جس میں اس سے پہلے بھی سکیورٹی فورسز، پولیس اہلکاروں کے علاوہ عام شہریوں کو بھی اغواء کیاگیا، جن میں سے بعض کو ہلاک بھی گیا گیا تھا۔

اسی بارے میں