بارودی سرنگ کا دھماکہ، تین اہلکار ہلاک

کرم ایجنسی تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سکیورٹی فورسز نے کرم ایجنسی میں شدت پسندوں کے خلاف غیر اعلانیہ کارروائی شروع کی ہے۔

پاکستان کے قبائلی علاقے کُرم ایجنسی میں حکام کے مطابق بارودی سرنگ کے دھماکے میں سکیورٹی فورسز کے تین اہلکار ہلاک اور دو زخمی ہوگئے ہیں۔

ایک اعلی فوجی اہلکار نے بی بی سی کو بتایا کہ یہ واقعہ سنیچر کی دوپہر وسطی کُرم کے علاقے ماسوزئی میں اس وقت پیش آیا جب سکیورٹی فورسز کے اہلکار ایک گاڑی میں ایک چیک پوسٹ کی طرف جارہے تھے۔

اہلکار کا کہنا تھا کہ دھماکے سے گاڑی میں سوار تین اہلکار ہلاک جبکہ دو زخمی ہوئے ہیں۔ اہلکار کا کہنا تھا کہ ہلاک ہونے والوں میں ایک افسر بھی شامل ہے۔

انہوں نے کہا کہ بارودی سرنگ کے ٹکرا نے سے گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی ہے۔

نامہ نگار دلاور خان وزیر کے مطابق فوجی اہلکار نے بتایا کہ دھماکے کے بعد سکیورٹی فورسز کے اہلکاروں کی لاشیں اور زخمیوں کو ایک ہیلی کاپٹر کے ذریعے پشاور منتقل کردیا ہے۔

ذرائع کے مطابق قبائلی علاقوں میں سال دو ہزار پانچ سے لے کر اب تک سڑک کنارے نصب بم دھماکوں میں ایف سی کے سات سو اہلکار ہلاک اور دو سو زخمی ہو چکے ہیں اور ان واقعات میں فوجی اہلکار شامل نہیں ہیں۔

یاد رہے کہ کُرم ایجنسی کے مختلف علاقوں میں سکیورٹی فورسز نے شدت پسندوں کے خلاف غیر اعلانیہ کاروائی شروع کی ہے جس میں اب تک سینکڑوں شدت پسندوں کے ہلاک کرنے کا دعوی کیاگیا ہے۔

اسی بارے میں