کوئٹہ، ریڈ کراس کا اہلکار اغوا

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد نے عالمی ریڈ کراس کے برطانوی اہلکار کو اغواء کرلیا ہے۔

پولیس کے مطابق مغوی یمنی نژاد برطانوی ہے۔

کوئٹہ سے بی بی سی کے نامہ نگار کے مطابق جمعرات کی دوپہر کو نامعلوم مسلح افراد نے کوئٹہ انتہائی احساس علاقے چمن ہاوسنگ سے بین الاقوامی تنظیم آئی سی آرسی کے اہلکار خلیل ڈیل کو اس وقت اغواء کرلیا جب وہ گاڑی میں دفتر سے نکلے۔

واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس اور سیکورٹی فورسز کی بھاری نفری نے چمن ہاوسنگ سکیم پہنچ کر تحقیقات شروع کردی ہیں۔

ڈپٹی انسپکٹرجنرل پولیس (آپریشن ) کوئٹہ نذیر کرد نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا ہے کہ مغوی خلیل ڈیل یمنی نژاد برطانوی شہری ہے اور وہ گذشتہ کئی ماہ سے آئی سی آر سی کوئٹہ آفس میں نمائندہ صحت کے طور پر کام کررہے تھے۔

آئی سی آر سی کو 2010 میں ایک بلوچ مسلح تنظیم نے دھمکی دیتے ہوئے سرگرمیاں ختم کرنے کو کہا تھا جس کے بعد مذکورہ ادارے نے اپنی سرگرمیاں محدود کردیں۔

خیال رہے کہ چمن ہاوسنگ اسکیم میں پہلے سے ہی سیکورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں کیونکہ یہاں زیادہ تراقوام متحدہ اور دیگرغیرملکی دفاتر موجود ہیں۔

یاد رہے کہ تیرہ دسمبر کو نامعلوم افراد نے پشین کے علاقے برشور سے ایک غیرسرکاری تنظیم بلوچستان رورل سپورٹ پروگرام کے چھ کارکنوں کواغواء کیا جنہیں بعد میں جنوبی وزیرستان پہنچا دیاگیا لیکن تاحال وہ بازیاب نہیں ہوسکے ہیں۔

یاد رہے کہ چمن ہاوسنگ سوسائٹی کے علاقے سے فروری 2009 میں اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے جان سولیکی کو اغواء کیا گیا تھا جس کی ذمہ داری بلوچ یونائیٹڈ لبریشن آرمی نامی تنظیم نے قبول کی تھی۔

اپریل 2009 میں جان سولیکی کو بلوچستان کے علاقے مستونگ کھڈکوچہ کے مقام پر مسلح افراد نے چھوڑ دیا تھا اس کے بعد مختلف غیر سرکاری اداروں کو دھمکیاں ملنا شروع ہوئیں۔

اسی بارے میں