غیر ملکیوں کا اغوا، گارڈ شاملِ تفتیش

گھر جہاں واردات ہوئی تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اغوا کاروں کی بازیابی کے لیے کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے

ملتان سے اغواء ہونے والے دو یورپی باشندوں کا تاحال کوئی سراغ نہیں لگایا جا سکا ہے ۔

جرمنی سے تعلق رکھنے والے مسٹر برنڈ جانز اور اطالوی باشندے مسٹر جیوانی کو گزشتہ جمعرات کی شام لگ بھگ ساڑھے سات بجے تین نامعلوم مسلح اغواء کار ملتان کینٹ سے متصل علاقہ قاسم بیلہ میں واقع ویسٹرن فورٹ کالونی سے اٹھا کر لے گئے تھے ۔ اس واقعہ کی ایف آئی آر نمبر اکتالیس سن دوہزار بارہ تھانہ صدر کینٹ میں زیر دفعہ چار سوپچاس اور تین سو پینسٹھ پی پی سی درج کی گئی ہے۔

ملتان میں نامہ نگار غظنفر عباس کے مطابق جمعہ کو سیکرٹری داخلہ پنجاب شاہد خان، آئی جی پنجاب جاوید اقبال اور ایڈینشل آئی جی کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ مشتاق سکھیرا ملتان پہنچے جنہیں آر پی او مبارک علی اطہر، سی سی پی او ملتان عامر ذوالفقار، ڈی پی او مظفر گڑھ ، ڈی سی او ملتان زاہد اختر زمان اور کمشنر ملتان خرم آغا نے واقعہ کے حوالے سے بریفنگ دی۔

صوبہ پنجاب میں قانون نافذ کرنے والے اس اعلیِ سطحی وفد نے ملتان پولیس، ڈی سی او اور کمشنر ملتان کے ہمراہ کرائم سین کا دورہ بھی کیا۔ آئی جی پنجاب نے مغویوں کی جلد از جلد بحفاظت بازیابی کے لیے پانچ رُکنی کمیٹی تشکیل دی ہے۔ اس کمیٹی کا سربراہ ایس ایس پی آپریشن ملتان اظہر اکرام کو بنایا گیا ہے جبکہ ایس پی کینٹ شہزاد آصف، ایس پی کاؤنٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ ملتان کرامت اللہ ملک، ایس پی سپیشل برانچ ملتان قیوم نواز قیصرانی اور ایس پی انوسٹی گیشن ملتان لیاقت چیمہ معاونت کریں گے۔

کمیٹی کے سرابراہ اظہر اکرام نے صحافیوں کو بتایا کہ کرائم سین سے اغواء کاروں کے فنگر پرنٹس سمیت دیگر شواہد اکٹھے کیے گئے ہیں جنہیں فورینزک معائنے کے لیے بھیجا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ جرمن این جی او ڈبلیو ایچ ایچ کے گیسٹ ہاؤس میں تعینات گارڈ سمیت مقامی سٹاف کے چند لوگوں کو شامل تفتیش کیا گیا ہے۔

دوسری طرف ویلٹ ہنگر ہائفے نامی جرمن این جی او نے ضلع مظفر گڑھ میں جاری سیلاب زدگان کی بحالی کے حوالے سے جاری پراجیکٹس پر کام بند کر دیا ہے ۔ این جی اوسے وابستہ مقامی کارکن سہمے ہوئے ہیں اور صحافیوں کو کسی بھی قسم کی معلومات دینے سے احتراز کر رہے ہیں ۔ ڈبلیوایچ ایچ کی منیجمنٹ نے اس واقعہ کے حوالے سے اپنا رد عمل دینے سے بھی گریز کیا ہے ۔

اسی بارے میں