غیرملکی فلاحی ادارے کا ایک اہلکار لاپتہ

سندھ میں سیلاب متاثرین کی بحالی کے لیے کام کرنے والے غیر ملکی ادارے کے ایک اہلکار اپنے ڈرائیور سمیت لاپتہ ہوگئے ہیں۔

پولیس نے ان کے اغوا کا شبہ ظاہر کیا ہے۔

یہ واقعہ کراچی سے تقریباً ساڑھے چار سو کلومیٹر دور قومی شاہراہ پر پیش آیا ہے۔ نوشہروفیروز کے پولیس اہلکاروں کا کہنا ہے کہ ٹام نامی ایک غیر ملکی شخص اپنے ڈرائیور گدا حسین میمن کے ساتھ صبح آٹھ بجے سکھر سے دادو جانے کے لیے نکلے تھے مگر ایک گھنٹے کے بعد دونوں کا موبائل ٹیلیفون پر رابطے منقطع ہوگئے۔

پولیس کو ٹام کی گاڑی بھریا شہر میں واقع زرعی ترقیاتی بینک کی پارکنگ ایریا سے ملی ہے۔

کراچی سے بی بی سی کے نامہ نگار ریاض سہیل کے مطابق ٹام کینیا کی شہریت رکھتے ہیں۔ ان کا تعلق کیئر انٹرنیشنل نامی این جی او سے ہے، جو دو ہزار دس کے سیلاب کے متاثرین کی بحالی کے لیے سکھر، لاڑکانہ اور دادو میں کام کر رہی ہے۔

پولیس نے واقعے کا ابھی تک کوئی مقدمہ درج نہیں کیا ہے، تاہم حکام کا کہنا ہے کہ یہ اغوا برائے تاؤن کا واقعہ ہے، اس کا شدت پسندی سے کوئی تعلق نہیں۔

کیئر انٹرنیشنل کے حکام نے ڈرائیور گدا حسین میمن پر شبہ ظاہر کیا ہے جبکہ ڈی ایس پی غلام علی بروہی نے بی بی سی کو بتایا کہ کیئر انٹرنیشنل کے حکام کا خیال ہے کہ ڈرائیور کسی سے رابطے میں ہوگا اور اسی نے ہی اپنی نقل حرکت کے بارے میں بتایا ہوگا۔

دو ہزار دس کے سیلاب کے بعد کئی غیر ملکی فلاحی ادارے سندھ کے متاثرہ اضلاع میں کام کر رہے ہیں مگر یہ اپنی نوعیت کا پہلا واقعہ ہے۔

اسی بارے میں