’چند افسران کو اسامہ کی موجودگی کا علم تھا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

امریکی تھنک ٹینک سٹریٹفور کی وکی لیکس پر افشا ہونے والے ای میلز کے مطابق پاکستانی فوج کے درمیانے درجے کے افسران کو القاعدہ کے رہنما اسامہ بن لادن کے ایبٹ آباد میں واقع کمپاؤنڈ کا علم تھا۔

یہ بات سٹریٹفور تھنک ٹینک کی ان مبینہ ای میلز میں کہی گئی ہے جو ہیک ہونے کے بعد وکی لیکس کو دے دی گئی تھیں۔

تھنک ٹینک کے کمپیوٹر پچھلے دسمبر میں ہیک ہوئے تھے۔

سٹریٹفور کا کہنا ہے کہ وہ کوئی ردِعمل نہیں دیں گے کہ آیا یہ ای میلز مستند ہیں یا نہیں۔

واضح رہے کہ حکومتِ پاکستان اور پاکستانی فوج نے تردید کی ہے کہ ان کو اسامہ بن لادن کی ایبٹ آباد میں موجودگی کا علم تھا۔

وکی لیکس پر شائع کی گئیں ای میلز کے مطابق سٹریٹفور کے اعلیٰ عہدیدار نے اپنے ساتھیوں کو ای میل میں لکھا ’درمیانے درجے سے اعلیٰ آئی ایس آئی اور فوجی افسران بشمول ایک ریٹائرڈ فوجی جنرل کو اسامہ بن لادن کی موجودگی کا علم تھا۔‘

ای میل میں کہا گیا ہے کہ ان فوجیوں کے نام اور رینک معلوم نہیں ہیں لیکن ہو سکتا ہے کہ امریکہ کے پاس یہ معلومات ہوں۔

اس مبینہ ای میل میں کہا گیا ہے کہ تقریباً بارہ افسران کو اسامہ کی موجودگی کا علم تھا۔ تاہم ای میل میں مزید کہا گیا ہے کہ ان افسران کے عہدے معلوم نہیں اور نہ ہی یہ معلوم ہو کہ وہ حاضر سروس تھے یا ریٹائرڈ۔

ای میل میں جن معلومات کا ذکر کیا گیا ہے وہ مبینہ طور پر ان دستاویزات سے حاصل کی گئی ہیں جو اسامہ کے کمپاؤنڈ سے برآمد ہوئے تھے۔

یہ واضح نہیں کہ سٹریٹفور نے یہ معلومات حکومتِ پاکستان کو دی یا نہیں۔ لیکن تھنک ٹینک کے ایک رکن نے ای میل میں کہا ’میں یہ معلومات حکومتِ پاکستان کو نہیں دوں گا کیونکہ ان پر بھروسہ نہیں کیا جا سکتا۔‘

سٹریٹفور کے سربراہ جارج فریڈمین نے کمپیوٹر ہیک ہونے کے بعد ایک بیان میں کہا تھا کہ اگر کوئی یہ سوچ رہا ہے کہ بہت اہم معلومات حاصل ہوں گی تو ان کو مایوسی ہو گی۔

اسی بارے میں