بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاجی مظاہرے

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پاکستان میں بجلی کا بحران گزشتہ کافی عرصے سے جاری ہے اور ملک میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف متعدد بار پرتشدد مظاہرے ہو چکے ہیں

پاکستان کے صوبہ پنجاب میں بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف مختلف شہروں احتجاج کا سلسلہ جاری ہے اور صوبائی دارالحکومت میں لاہور میں ہونے والے احتجاج کے دوران فائرنگ سے ایک نوجوان ہلاک ہوگیا۔

ُادھر وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے اعلان کیا کہ لوڈشیڈنگ کے خلاف لانگ مارچ کیا گیا تو وہ اس کی قیادت کریں گے۔

پیر کو بجلی کی طویل لوڈشیڈنگ کے خلاف لاہور اور فیصل آباد سمیت دیگر شہروں میں مظاہرے کیے گئے۔

بی بی سی کے نامہ نگار عبادالحق کے مطابق مظاہرین نے احتجاج کرتے ہوئے گاڑیوں کو نقصان پہنچایا تھوڑ پھوڑ کی اور بجلی فراہم کرنے والے ادارے کی عمارت کا گھیراؤ کیا۔

لاہور میں لوڈشیڈنگ کے خلاف مظاہرین نے ایک پیٹرول پمپ پر حملہ کر کے اس کو آگ لگا دی۔

مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے پیٹرول پمپ کے سکیورٹی گارڈر نے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک نوجوان ہلاک ہوگیا۔

شہر کے دیگر علاقوں میں بھی مظاہرین نے لوڈشیڈنگ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ٹائر جلائے گئے اور حکومت مخالف نعرے لگائے۔

فیصل آباد میں مظاہرین جلوس کی شکل میں شہر کو بجلی فراہم کرنے والے ادارے فسیکو کے باہر اکٹھے ہوگئے اور عمارت گھیراؤ کیا۔

مظاہرین نے احتجاج کے دوران کئی گاڑیوں پر حملہ کیا اور ڈنڈوں سے گاڑیوں کے شیشے توڑ دیے۔ فیصل آباد میں ہی فیکٹری مزدوروں نے سمندری روڈ پر احتجاج کرتے ہوئے ٹائر جلائے اور سڑک کو ٹریفک کے لیے بند کر دیا۔

وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے فیصل آباد میں تاجروں سے ملاقات کی اور کہا کہ اب لانگ مارچ کا وقت آ گیا ہے اور جب لانگ مارچ کیا جائے گا تو وہ اس کی قیادت کریں گے۔

وزیراعلیٰ شہباز شریف نے یہ اعلان بھی کیا کہ وہ لوڈشینڈنگ کے خلاف سپریم کورٹ میں زیر سماعت مقدمے میں خود فریق بنیں گے۔

شہبازشریف نے کہا کہ وفاقی حکومت کا پنجاب کے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ نہیں ہوسکتا کہ ملک کا سب سے بڑا صوبہ قربانی بھی دے اور اسے قربانی کا بکرا بھی بنایا جائے۔

وزیر اعلیٰ شہباز شریف نے اپیل کی کہ احتجاج کے دوران املاک کو نقصان نہ پہنچایا جائے۔

دوسری طرف آل پاکستان انجمن تاجران نے بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف دس اپریل کو ہڑتال کرنے کا اعلان کیا ہے۔

فیصل آباد میں مزدوروں کی تنظیم لیبر قومی موومنٹ بھی بجلی کی لوڈشیڈنگ کے خلاف اٹھائیس مارچ کو احتجاج کرنے کا اعلان کیا ہے۔

تنظیم کے عہدیدار اسلم معراج کا کہنا ہے کہ لوڈشیڈنگ کی وجہ سے مزدور بے روزگار ہو رہے ہیں لیکن حکومت اس کا نوٹس نہیں لے رہی۔

ُادھر فیصل آباد پولیس نے جھنگ روڈ پر لوڈشیڈ نگ کے خلاف احتجاج کے دوران توڑ پھوڑ کرنے پر تین سو نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔

اسی بارے میں