خیبر ایجنسی: ایک لاکھ سے زائد افراد بےگھر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اقوامِ متحدہ کا کہنا ہے کہ پاکستان کے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں فوجی آپریشن کے باعث ایک لاکھ سے زائد افراد نقل مکانی کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں۔

اقوام متحدہ کے ادارے برائے پناہ گزین ’یو این ایچ سی آر‘ کی ایک پریس ریلیز کے مطابق صوبہ خیبر پختونخوا کے شہر نوشہرہ کے قریب قائم جلوزئی کیمپ میں پناہ گزینوں کی تعداد باسٹھ ہزار تک پہنچ گئی ہے۔

یو این ایچ سی آر کا کہنا ہے کہ گزشتہ ہفتے بدھ کو ایک ہزار سات سو اکیس خاندانوں کا اندراج کیا گیا جس میں سے صرف پانچ سو پندرہ افراد نے جلوزئی کیمپ میں رہنا پسند کیا اور باقی سب شہر کے مختلف علاقوں میں بس رہے ہیں۔

پریس ریلیز میں درج ہے کہ حالیہ دنوں میں فوجی کارروائی کی شدت میں اضافے کے باعث پناہ گزینوں کی ایک نئی لہر جلوزئی کیمپ پہنچی ہے جہاں انہیں بنیادی ضروریات کی اشیاء فراہم کی جا رہی ہیں۔

خیبر پختونخواہ میں پناہ گزینوں کے حوالے سے چیف کوآرڈینیٹر فیص محمد فیضی نے بی بی سے بات کرتے ہوئے بتایا ’تیس جنوری سے تیس ہزار خاندان جلوزئی پہنچے ہیں اور ان میں سے بائیس ہزار خاندانوں کی رجسٹریشن ہو چکی ہے۔‘

ان کا کہنا تھا ’ان بائیس ہزار خاندانوں میں سے تقریباً اٹھارہ ہزار خاندانوں نے خود اپنی مرضی سے یہ فیصلہ کیا ہے کہ وہ کیمپ میں نہیں رہنا چاہتے۔‘

فیص محمد فیضی کا مزید کہنا تھا ’انفرادی طور پر یہ تعداد ایک لاکھ دس ہزار بنتی ہے۔‘

واضح رہے کہ پاکستان کے قبائلی علاقے خیبر ایجنسی میں رواں سال بیس جنوری سے شدت پسندوں کے خلاف فوجی آپریشن جاری ہے۔ یو این ایچ سی آر کے بقول سترہ مارچ سے روزانہ تقریباً دو ہزار خاندانوں کا اندراج کیا جا رہا ہے جو نقل مکانی کرنے پر مجبور ہو گئے ہیں۔

اسی بارے میں