چوٹ لگنے سے جان بچ گئی

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption گیاری سیکٹر میں گرنے والے برفانی تودے کے نیچے ایک سو انتالیس فوجی اور شہری اہلکار دبے ہوئے ہیں

سیاچن کے دامن میں منوں برف اور بھاری پتھروں تلے دبنے والے پاکستانی فوج کے جن سو سے زائد جوانوں کی فہرست حکام نے جاری کی ہے ان میں ایک ایسے شخص کا نام بھی شامل ہے جو بالکل زندہ سلامت اور محفوظ ہے۔

پنجاب کے ضلع ٹوبہ ٹیک سنگھ کے آصف مسیح پاکستان آرمی میں خاکروب ہیں اور کا نام فہرست میں ایک سو سترہویں نمبر پر ہے۔

جب ان کا نام فوج کے تعلقات عامہ کی جانب سے جاری ہونے والی فہرست کے ذریعے سامنے آیا اور مقامی ذرائع ابلاغ کے نمائندوں نے پیر محل کے قریب واقع گاؤں میں ان کے گھر کا رخ کیا تو انہیں معلوم ہوا کہ آصف مسیح تو برفانی تودے کی زد میں نہیں آئے بلکہ بالکل محفوظ ہیں۔

سات اپریل کو گیاری سیکٹر میں گرنے والے برفانی تودے کے نیچے ایک سو انتالیس فوجی اور شہری اہلکار دبے ہوئے ہیں جن تک رسائی کی کوششیں حادثے کے نو دن بعد بھی جاری ہیں۔

مقامی صحافی محمد خالد نے بی بی سی اردو کے نامہ نگار عباد الحق کو بتایا کہ جب انہوں نے دیگر صحافیوں کے ساتھ آصف مسیح کی بیوی سونم بی بی سے رابطہ کیا تو انہوں نے بتایا کہ آصف مسیح سے ان کی ٹیلی فون پر بات ہوئی ہے اور بقول ان کے ان کے شوہر محفوظ ہیں۔

آصف مسیح کی بیوی نے مقامی صحافیوں کو بتایا کہ پہلے انہیں یہ اطلاع ملی تھی کہ ان کے شوہر برفانی تودے کی زد میں آگئے ہیں تاہم ان کے بقول صحافیوں کے ان کے گھر پہنچنے سے لگ بھگ پندرہ منٹ پہلے ان کے شوہر آصف نے ان سے ٹیلی فون پر رابطہ کیا اور اپنی خیریت کے بارے میں بتایا۔

تفصیل بتاتے ہوئے سونم بی بی نے کہا کہ ان کے شوہر آصف مسیح کو برفانی تودہ گرنے سے چند روز پہلے چوٹ لگ گئی تھی اور انہیں زخمی ہونے کی وجہ سے گیاری سیکٹر سے ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا۔

سونم بی بی کے بقول ان کے شوہر کمبائنڈ ملٹری ہسپتال سکردو میں زیرِ علاج ہیں جہاں ان کا آپریشن ہونا ہے۔

آصف مسیح کے زندہ اور محفوظ ہونے کی اطلاع ملنے پر ان کے گاؤں والے مبارکباد دینے کے لیے ان کے گھر جمع ہوگئے۔ مقامی صحافی محمد خالد نے بتایا کہ آصف مسیح کے گھر والوں نے ان کی خیریت معلوم ہونے پر مٹھائی تقسیم کی اور یہ مٹھائی وہاں موجود صحافیوں کو بھی کھلائی گئی۔

بی بی سی نے جب آصف مسیح کے بھائی اشرف مسیح سے ٹیلی فون کے ذریعے رابطہ کیا تو انہوں نے بھائی کے بارے میں تفصیلات بتانے سے گریز کیا تاہم انہوں نے اس بات کی تصدیق کی کہ ان کے گیاری سیکٹر میں ڈیوٹی دینے والے بھائی خیریت سے ہیں اور ان کا اپنےگھر والوں سے رابطہ ہوا ہے۔

آصف مسیح کی ایک چار سال کی بیٹی ہیں اور ان کے نو بھائیوں سے چار فوج میں ملازم ہیں۔

اسی بارے میں