حیدرآباد: نیورو سرجن ڈاکٹر آفتاب قریشی اغواء

ڈاکٹر آفتاب قریشی تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption ڈاکٹر آفتاب کی کراچی کی رہائش گاہ پر پولیس اور خفیہ ایجنسیوں کے اہل کار موجود تھے

حیدرآباد کے نیورو سرجن ڈاکٹر آفتاب قریشی کو نامعلوم افراد نے گزشتہ رات کراچی سے اغواءکر لیا گیا ہے۔ ان کے گھر والوں کو تاوان کے مطالبے کے سلسلے میں فون بھی موصول ہوا ہے۔

ڈاکٹر آفتاب حیدرآباد کے ساتھ ساتھ کراچی میں بھی اپنا کلینک چلاتے تھے۔ حیدرآباد میں ان کے گارڈ دلشاد کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر صاحب رات کراچی سے حیدرآباد کے لیے نکلے تھے لیکن راستے میں لاپتہ ہوگئے۔

ڈاکٹر آفتاب کے بھائی ڈاکٹر منور قریشی نے پولس کو بتایا ہے کہ ان کے بھائی اغواء ہو گئے ہیں اور انہیں ایک فون موصول ہوا ہے جس میں تاوان کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

حیدرآباد سے صحافی علح حسن نے بتایا کہ ڈاکٹر آفتاب کے بھائی ڈاکٹر منور اور بڑے بیٹے ممتاز قریشی یہ بتانے سے قاصر رہے کہ انہوں نے ڈاکٹر آفتاب قریشی کے اغواءکی رپورٹ چوبیس گھنٹے گزرنے کے باوجود بھی درج نہیں کرائی۔

ممتاز قریشی نے بات کرتے کرتے فون کسی اور شخص کو دے دیا جو اپنا تعارف کروانے پر تیار نہیں تھے اور کہہ رہے تھے کہ وہ فیملی ممبر ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ تفصیلات کے لیے انتظار کرو۔

ڈاکٹر آفتاب کی کراچی کی رہائش گاہ پر پولیس اور خفیہ ایجنسیوں کے اہل کار موجود تھے جو ان کے بڑے بیٹے ممتاز کا فون بھی سن رہے تھے اور انہیں براہ راست کسی سے بات کرنے کی اجازت نہیں دے رہے تھے۔

ماضی میں بھی حیدرآباد کے کئی مشہور اور مصروف ڈاکٹروں کو تاوان کی غرض سے اغواءکیا جاتا رہا ہے۔ اغواء کنندگان سے رہائی کے بعد دو ڈاکٹر حیدرآباد ہی چھوڑ گئے۔

اسی بارے میں